آج کل انتہائی علیل ڈاکٹر اجمل نیازی کے دل کی انوکھی خواہش سامنے آگئی

لاہور (ویب ڈیسک) نامور کالم نگار توفیق بٹ اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔ ہمارے ایک محترم کالم نویس ڈاکٹر اجمل نیازی آج کل شدید علیل ہیں، وہ فرماتے ہیں ” میں اپنی زندگی کا آخری کالم نوائے وقت کے لیے لکھ کر دنیا سے رخصت ہونا چاہتا ہوں“ ….یہ بڑی ہمت حوصلے کی بات ہے

اتنے برسوں تک وہ نوائے وقت سے وابستہ ہیں، نوائے وقت کے ساتھ ان کی محبت کو سلام، پر دوسری طرف ان کی اس محبت کا صلہ یوں دیا جارہا ہے اُن کی کئی تنخواہیں ادا نہیں کی جارہیں، اُن کی بار بار گزارش پر بھی ادا نہیں کی جارہی، نوائے وقت کی انتظامیہ سے ہماری گزارش ہے اس سے قبل کہ نوائے وقت کو ٹوٹ کر چاہنے والا یہ شخص رخصت ہو جائے (اللہ اُنہیں اچھی صحت والی زندگی عطا فرمائے) اُس کا حق اُسے ادا کردیاجائے کہ شدید بیماری کے عالم میں مالی معاونت کی انہیں اشد ضرورت ہے، …. جہاں تک طارق عزیز کا تعلق ہے بظاہر وہ ایک انتہائی سنجیدہ انسان دکھائی دیتے تھے، اُن کی اس سنجیدگی کے پیش نظر کبھی کبھی احساس ہوتا تھا وہ بڑے متکبر انسان ہیں، ایسے نہیں تھا، عملی طورپر وہ بڑے عاجز انسان تھے، ورنہ کم ازکم میری ان سے کبھی نہ بنتی وہ بہت کم بولتے تھے، پر جو بولتے بہت سوچ سمجھ کر بولتے تھے، ان کی زبان سے نکلا ہوا کوئی لفظ بے مقصد نہیں ہوتا تھا، اُنہوں نے کچھ فلموں میں بھی کام کیا، بعد میں فلمی دنیا کا جو ماحول بن گیا وہ شاید اُنہیں راس نہیں آیا، ورنہ جو فلمیں میں نے ان کی دیکھیں وہ ایک اچھے اداکار تھے۔ میں نے ایک بار فلمی دنیا کو مکمل طورپر خیر باد کہنے کی وجہ ان سے پوچھی، پہلے تو سرجھکا کر کچھ دیر کے لیے خاموش ہوگئے، پھر بولے ” یارا ہمارے ہاں لوگ فنکار کو صرف پہچانتے ہیں عزت نہیں دیتے“۔ اس سے آپ اندازہ لگالیں وہ عزت آبرو کو کس حدتک مقدم رکھتے تھے ۔ عزت آبرو کو وہ اہمیت نہ دیتے ہوتے، سیاست کو بھی خیر باد نہ کہتے، اس شعبے کے لیے بھی وہ مناسب آدمی نہیں تھے۔ میں سیاست کو خیر باد کہنے کے اسباب ان سے پوچھتا وہ آغا شورش کاشمیری کا یہ شعر مجھے سنا دیتے ۔میرے وطن کی سیاست کا حال مت پوچھو….گھری ہے طوائف تماشبینوں میں “ ….

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *