ابصار عالم جیت گئے ، ایف آئی اے ہار گئی ۔۔۔

اسلام آباد (ویب ڈیسک) ایف آئی اے نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں اپنی غلطی تسلیم کرتے ہوئے عدالت کو بتایا ہے کہ سابق چیئرمین پیمرا ابصار عالم کے ٹویٹ پر بنایا گیا کیس ڈیپارٹمنٹ کی قانونی رائے کے بعد بند کر دیا گیا ہے۔چیف جسٹس اطہر من اللّٰہ نے ریمارکس دئیے کہ آزادی اظہار رائے

بہت اہم بنیادی حقوق کا معاملہ ہے ، ریاست کا کام تو آزادی اظہار رائے کو تحفظ فراہم کرنا ہے۔ پیر کو اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے سینئر صحافی ابصار عالم کی ایف آئی اے کے کال اپ نوٹس کے خلاف درخواست کی سماعت کی، اس موقع پر ابصار عالم ، جرنلسٹ ڈیفنس کمیٹی کی ایمان مزاری اور عثمان وڑائچ ایڈووکیٹ عدالت میں پیش ہوئے۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل قاسم ودئود نے عدالت کو بتایا کہ قانونی رائے کے بعد اس کیس کو بند کر دیا گیا ہے ، پیکا ایکٹ کی سیکشن 20 کے تناظر میں ایس او پیز بھی آگئے ہیں۔ چیف جسٹس اطہر من اللّٰہ نے کہا کہ کیا تفتیشی افسر نے جان بوجھ کر نوٹس جاری کیا تھا ، یہ غیر ضروری تنگ کرنا ہے جس کے اثرات ہوتے ہیں ، ایک غلطی ہوئی ہے تو اچھی بات ہے کہ اس کو سدھارا بھی گیا ہے ، آئندہ کے لئے چیزوں کو درست ہونا چاہیے۔ابھی اس کیس کو نمٹا نہیں رہے ، اس درخواست کو ایف آئی کے خلاف دیگر درخواستوں کے ساتھ 27 ستمبر کو دوبارہ سنا جائے گا، بعد ازاں ابصار عالم نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اللّٰہ کا شکر ہے کہ ایک لمبی لڑائی میں چھوٹی سی فتح ملی ہے۔آزادی اظہار رائے شہریوں کا بنیادی حق ہے، ڈارک فورسز کو پش بیک ملا ہے جو آئین میں دئیے گئے حقوق کے خلاف مسلسل جدوجہد کرتی رہتی ہیں،یہ عام شہریوں ، آئین میں دئیے گئے حق اور آئین کی فتح ہے۔جرنلسٹ ڈیفنس کمیٹی کے رہنما عثمان وڑائچ ایڈووکیٹ نے کہا کہ نوٹس کی واپسی ہمارے اس موقف کی تائید ہے کہ ایف آئی اے کے نوٹس کو تنگ کرنے کے ہتھیار کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔

2 responses to “ابصار عالم جیت گئے ، ایف آئی اے ہار گئی ۔۔۔”

  1. Abdul Latif Shaikh says:

    Is Madina State?

  2. Msa.murad says:

    It is very regretted to say pakistani.govt is a mafiya. They have no more job. One side population can not afford for Bread.
    PM by force pushing
    Judges.nab.fia.opp leaders. Innocent without any case police attacked in night time
    And picked. Taking in jail. That is a pakistan. They have no other job.sorry to govt.i am thinking population will soon strart jehad against pak.govt.