ابھی تو پارٹی شروع ہوئی ہے ۔۔۔

واشنگٹن (ویب ڈیسک )سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ مواخذے سے ایک بار پھر بچ گئےجس کے ساتھ ہی وہ اپنے پرانے رنگ میں آگئےاور کہاکہ تحریک ابھی صرف شروع ہوئی ہے۔دوسری جانب امریکی صدر بائیڈن نے کہاہےکہ فیصلہ جمہوریت کیلئے افسوسناک ہے،امریکا انتشار اور بدامنی کی کوئی جگہ نہیں ۔تفصیلات کے مطابق

امریکی سینیٹ نے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو مواخذے کی دوسری کارروائی میں مظاہرین کو ’بغاوت پر اکسانے‘ کے الزام سے بری کیا ہے۔غیرملکی خبررساںادارے کےمطابق ہفتے کو مواخذے کی کارروائی میں مظاہرین کو 6 جنوری کو ہونے والے کیپٹل ہل پر دھاوا بولنے کےلیے اکسانے کے الزام میں 57 سینیٹرز نے’ قصور وار ‘ جبکہ 47 سینیٹرز نے’ قصور وار نہیں‘ قرار دیا، مواخذے کے لیے دو تہائی اکثریت ( 67) ووٹ درکارتھے۔ڈونلڈ ٹرمپ دوسری مرتبہ مواخذے کی کارروائی میں الزامات سے بری ہوئے ہیں، فیصلے کے بعد ٹرمپ نے کہا کہ ان کی تحریک ابھی صرف شروع ہوئی ہے، امریکی کانگریس کے فیصلے کے بعد صدر بائیڈن نے کہاہماری تاریخ کے اس افسوسناک باب نے ہمیں یاد دلایا ہے کہ جمہوریت کمزور ہو گئی ہے۔

Comments are closed.