اتحادیوں کا آئے روز عمران حکومت سے ناراض ہونا ، آخر وجہ کیا ہے ؟

لاہور (ویب ڈیسک) نامور صحافی محمد اکرم چوہدری اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔وزیراعظم عمران خان کہتے ہیں کہ ناراض اتحادیوں کو ہر صورت منائیں گے۔ یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ منتخب وزیراعظم کی طرف سے اتحادیوں بارے ایسے الفاظ سننے کو ملے ہیں۔ ہم کئی ماہ سے اتحادیوں کے مسائل لکھ رہے ہیں

لیکن حکومت دھن کی پکی ہے اس نے بھی تہیہ کر رکھا ہے کہ اتحادیوں کو ہر صورت ہر وقت ناراض ہی رکھنا ہے۔ مسئلہ اتحادیوں کو منانا نہیں ہے مسئلہ یہ ہے کہ وہ ناراض کیوں ہوتے ہیں۔ ہم دہرا دیتے ہیں کہ پاکستان تحریک انصاف اتحادی جماعتوں کو ان کا جائز حق اور مقام نہیں دیتی۔ جب حکومت منتخب اتحادیوں کو مشاورتی عمل اور فیصلہ سازی میں شریک ہی نہ کرے اور اتحادیوں کی ذمہ داری صرف ووٹ دینا ہو تو ناراضی ختم نہیں ہو سکتی۔ اگر حکومت اتحادیوں کے کچھ کام کر رہی ہوتی ہے تو اسے یہ بھی ذہن میں رکھنا چاہئیے کہ اتحادی بھی حکومت کے کئی کام کر رہے ہوتے ہیں۔ اگر حکومت یہ سمجھتی ہے کہ اس کی سوچ اتحادیوں سے مختلف ہے اور وہ سولو فلائٹ کرنا چاہتی ہے تو اتحاد ختم کرے اور یہ روز کا روٹھنا منانا ختم ہو۔ پنجاب میں چودھریوں، بلوچستان میں اختر مینگل، جی ڈی اے اور ایم کیو ایم سمیت کوئی ایک اتحادی بھی حکومت سے خوش نہیں ہے۔ یہ حالات حکومت کی غیر ضروری ضد اور انا کی وجہ سے ہے۔ پی ٹی آئی حکومت اتحادیوں کے ووٹوں پر کھڑی ہے لیکن اتحادیوں کو نظر انداز کر کے سارے شاٹس خود کھیلنا چاہتی ہے پارلیمانی نظام میں یہ ممکن نہیں ہے۔ حکومت اپنی حکمت عملی پر غور کرے ورنہ اتحادی بھی کب تک برداشت کریں گے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.