اراضی واگزار ، موصوف کو لینے کے دینے پڑ گئے

لاہور (ویب ڈیسک) مسلم لیگ (ن) کی رہنما اور سابق ایم این اے تہمینہ دولتانہ کے بھائی کے زیر قبضہ کروڑوں روپے کی سرکاری زمین واگزار کروا کر دوبارہ سرکار کے نام منتقل کر دی گئی۔ جبکہ 8 کروڑ روپے سے زائد مالیت کی سرکاری اراضی پر قبضہ سے متعلق ایک دوسرے کیس

کی تحقیقات آخری مراحل میں پہنچ گئی ہے۔ دونوں کیسوں میں کروڑوں روپے کی سرکاری زمین پر قبضہ کرنے والوں اور سہولت کاروں پر مقدمہ کے اندراج سے متعلق فیصلہ نہیں ہو سکا جبکہ زیر قبضہ سرکاری زمین کے رینٹ کی ریکوری کا فیصلہ بھی زیر غور ہے۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ وہاڑی سے خواتین کے کوٹہ سے منتخب ہونیوالی مسلم لیگ (ن) کی سابق ایم این اے تہمینہ دولتانہ کے بھائی میاں زاہد دولتانہ نے وہاڑی کے علاقہ موضع خان گڑھ میں 48 ایکڑ سرکاری زمین پر قبضہ کر رکھا تھا اور 15 سال سے یہ سرکاری زمین تہمینہ دولتانہ کے بھائی میاں زاہد دولتانہ کے قبضہ میں تھی اور زیر کاشت تھی۔ سرکاری زمین محکمہ آبپاشی کی ملکیت تھی۔ جسے محکمہ انسداد بدعنوانی نے واگزار کروا کر اب دوبارہ محکمہ آبپاشی کے نام منتقل کر دیا گیا ہے۔ اس سرکاری زمین کی مالیت 8 کروڑ روپے بتائی گئی ہے۔ 15 سال سرکاری زمین پر قبضہ کرنے پر کرائے کی وصولی بھی زیر غور ہے۔ جس کا ابتدائی تخمینہ 6 کروڑ روپے لگایا گیا ہے۔ جبکہ وہاڑی سپورٹس کمپلیکس سے متعلق کیس میں 1 کروڑ 20 لاکھ روپے مالیت کی 32 کنال زمین بھی واگزار کروا لی گئی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *