اسد عمر نے اندر کی کہانی بتا دی

کراچی (ویب ڈیسک) وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے فیصل واوڈا کو سینیٹ الیکشن لڑانے کی اندر کی بات بتادی، اسد عمر نے کہا کہ دہری شہریت کیس کا فیصلہ فیصل واوڈا کیخلاف آسکتاہے، اسی لئے فیصل واوڈا نے سینیٹ کی رکنیت لینے کو ترجیح دی ہے، فیصل واوڈا سینئر لیڈر اور وفاقی وزیر ہیں

اس لئے ان کی ترجیح پر انہیں سینیٹ کا الیکشن لڑایا جارہا ہے، فیصل واوڈا کو سینیٹ کا ٹکٹ دینے پر اعتراض بھی سمجھ میں آنے والا ہے کہ ایک موجودہ ایم این اے کو سینیٹ کا ٹکٹ کیوں دیا جارہا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے نجی ٹی وی کے پروگرام میں کیا ۔ اسی پروگرام میں سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے بھی گفتگو کی گئی۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ راجہ ظفر الحق کو سینیٹ کا ٹکٹ نہ دینے کا فیصلہ ان کی رضامندی سے کیا گیا، پی ٹی آئی کے لوگ وزیراعظم عمران خان پر اعتماد نہیں کررہے، یوسف رضا گیلانی کے سینیٹر بننے کو وزیراعظم عمران خان کیخلاف تحریک عدم اعتماد سے نہیں جوڑتا، اس دن سے ڈرتا ہوں جب عمران خان سارا قصور قائداعظم پر ڈال دیں گے، وزیراعظم کہیں یہ نہ کہہ دیں کہ قائداعظم ملک نہ بناتے تو یہ مسئلے ہی پیدا نہ ہوتے۔وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نےکہا کہ تحریک انصاف نے سینیٹ ٹکٹوں پر نظرثانی کا فیصلہ نہیں کیا ہے، سینیٹ کیلئے پی ٹی آئی کے ایک سے زیادہ لوگوں نے ٹکٹ جمع کروائے ہیں، سینیٹ ٹکٹوں سے متعلق حتمی فیصلہ کاغذات نامزدگی واپس لینے کی آخری تاریخ تک ہوگا، تحریک انصاف سندھ کا فیصل واوڈا کو سینیٹ کا ٹکٹ دینے پرا عتراض سمجھ میں آنے والا ہے، صاف بات ہے ایک ایم این اے کو سینیٹ کا ٹکٹ کیوں دیا جارہا ہے، فیصل واوڈا کی ترجیح ہے انہیں سینیٹ میں منتقل کردیا جائے یہ بھی سمجھ میں آنے والی بات ہے کیونکہ دہری شہریت کیس کا فیصلہ فیصل واوڈا کیخلاف آسکتاہے، فیصل واوڈا سینئر لیڈر اور وفاقی وزیر ہیں اس لئے ان کی ترجیح پر انہیں سینیٹ کا الیکشن لڑایا جارہا ہے۔ اسد عمر کا کہنا تھا کہ دہری شہریت کیس میں فیصلہ فیصل واوڈا کیخلاف آیا تو دوبارہ الیکشن ہوگا ،فیصل واوڈا کے پاس الیکشن میں دوبارہ حصہ لینے کا حق ہوگا،

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *