اسلامی نظریاتی کونسل نے سانحہ سیالکوٹ کے مجرموں کے ساتھ کس سلوک کا مطالبہ کردیا ؟

اسلام آباد (ویب ڈیسکاسلامی نظریاتی کونسل نے سانحہ سیالکوٹ میں ملوث ملزمان کو قانون کے مطابق قرار واقعی سزا دینے کا مطالبہ کردیا۔اسلامی نظریاتی کونسل کے226ویں خصوصی اجلاس اورماہرین کےساتھ فکری نشست ہوئی جس کا متفقہ اعلامیہ جاری کردیا گیا۔اعلامیے میں کہا گیا کہ فکری نشست میں سانحہ سیالکوٹ کو انتہائی قابل مذمت قرار دیتے ہوئے

اس سانحہ میں ملوث تمام ملزمان کو قانونی عمل کےذریعےقرارواقعی سزا دینے کامطالبہ کیا گیا ہے۔اجلاس نے قرار دیا کہ پاکستانی حکومت نے اس مشکل صورت حال کو انتہائی دانش مندی کے ساتھ نمٹایا جس پر سری لنکن حکومت اور عوام نے اطمینان کا اظہار کیا،اسلامی نظریاتی کونسل نے سری لنکن شہری پریانتھا کمارا کو بچانے کی کوشش کرنے والے ملک عدنان کے لیے وزیراعظم کی جانب سے سند توصیف اور تمغہ شجاعت کے اعلان کو مستحسن اقدام قرار دیا۔اعلامیےکےمطابق کونسل نےفیصلہ کیا ہےکہ منفی رجحانات کی وجوہات،اسباب اورانسداد کےلیےماہرین موضوع کےساتھ تسلسل سے فکری نشستوں کا سلسلہ جاری رکھا جائے گا تا کہ حکومت، ریاست، پالیسی ساز اور قانون ساز اداروں کے سامنے طویل المعیاد اور جلد روبعمل لانے والی تجاویز اور آرا تشکیل دی جاسکیں اور عملی اقدامات اٹھائے جاسکیں ۔ کونسل کےاجلاس اورماہرین موضوع نےمتفقہ طور پرباور کیا کہ موجودہ عدالتی نظام میں کافی حد تک اصلاح کی اس اند ازسےگنجائش موجو دہےکہ ان اداروں پرعوامی اعتمادبحال ہو سکے ۔اجلاس میں پاکستان کے مذہبی، سیاسی اور حکومتی قائدین کے بروقت اور درست انداز میں سانحہ سیالکوٹ کی مذمت اور دوست ملک سری لنکا کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہوئے کیے گئے اقدامات کو قابل تحسین قرار دیا گیا۔

Comments are closed.