اصل جوڑ کس کس کے درمیان پڑے گا ؟

لاہور (ویب ڈیسک) این اے 133 ضمنی انتخاب ملتوی کرنے سے متعلق الیکشن کمیشن نے پنجاب حکومت کی درخواست مسترد کر تے ہوئے قراردیاکہ این اے 133 میں پولنگ 5 دسمبر کو ہی ہوگی۔پولنگ ڈے برقرار رکھنے کا فیصلہ،چیف الیکشن کمشنر کی صدارت اجلاس میں کیا گیا۔ چیف الیکشن کمشنر نے

فیصلہ سے متعلق سیکرٹریٹ حکام کو آگاہ کردیا۔ الیکشن کمیشن جلد پنجاب حکومت کو فیصلہ سے متعلق آگاہ کرے گا۔جبکہ ریٹرنگ آفیسر نے سکروٹنی کے بعد لاہور کے حلقے این اے 133کے ضمنی انتخاب کیلئے امیدواروں کی فہرست جاری کردی۔ 14 امیدواروں کے کاغذ ا ت نامزدگی منظور جبکہ 7کے مسترد کئے گئے۔ الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری فہرست کے مطابق این اے 133 کے لیے کل 21 امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کروا ئے۔14 امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کیے جبکہ ضمنی الیکشن میں حصہ لینے والے 7 امیدواروں کے کاغذات نامزدگی مسترد کیے گئے۔ مسلم لیگ ن کے چوہدری نصیر بھٹہ اور شائستہ پرویز ملک کے کاغذات نامزدگی منظور کیے گئے۔پیپلز پارٹی کے اسلم گل کے کاغذات نامزدگی منظور کیے گئے۔ پاکستان تحریک انصاف کے جمشید اقبال چیمہ اور مسرت جمشید کے کاغذات مسترد کیے گئے۔ اکمل خان، رضوان الحق، محمد عظیم، محمد عنبر کے کاغذات نامزدگی بھی مسترد کیے گئے۔ لیکشن کمیشن نے بتایا کہ امیدوار کاغذات نامزدگی 11 نومبر تک واپس لے سکتے ہیں۔ امیدواروں کو 12 نومبر کو انتخابی نشانات جاری کیے جائیں گے۔ دوسری جانب لاہو ہائیکورٹ نے این اے 133 کے انتخابات کیلئے الیکشن ایپلٹ ٹربیونل تشکیل دے دیا۔ ٹریبونل 9 نومبر تک امیدواروں کی اپیلوں پر سماعت کرے گا۔ الیکشن ایپلیٹ ٹربیونل لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد جمیل خان پر مشتمل ہے۔ ٹربیونل ریٹرنگ آفیسر کی جانب سے کاغذات نامزدگی منظور یا مسترد کرنے کے فیصلے کیخلاف اپیلوں پر سماعت کرے گا۔ ایک رکنی ٹربیونل 9 نومبر تک اپیلوں کی سماعت کرے گا۔

Comments are closed.