افسوسناک حقیقت سامنے آگئی ،

سکھر (ویب ڈیسک) سکھر کے تعلقہ پنوعاقل کے نواحی دیہی علاقے میں گیارہ افراد کو زندگی سے محروم کرنے کے واقعہ کی ڈاکٹری رپورٹ جاری کردی گئی واقعہ کے بعد زندگی سے محروم ہونے والوں کی تعداد 11 سے بڑھ کر 13 ہوگئی ہے۔ رپورٹ میں دو خواتین کے حاملہ ہونے اور پیٹ میں ہی

بچوں کی موت ہو جانے کا انکشاف ہوا ہے واردات کے دوران حاملہ خواتین کی جانب سے مزاحمت بھی کی گئی، عورتوں کے سروں پر ضربیں لگائی گئیں۔ پولیس ذرائع کے مطابق ایک ہی گھر میں زندگی سے محروم کیے جانے والے گیارہ افراد کی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ ان میں شامل ملزم وہاب اللہ کی بیوی اور اس کی بہو حمل سے تھیں رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ ان کو تیز دہار آلہ سے موت کے حوالے کیا گیا ہے اور ان کے سر پر کسی چیز سے ضرب بھی ماری گئی تھی جبکہ رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ حاملہ خواتین نے اپنے ساتھ ہونے والے واقعہ پر ملزمان سے مزاحمت بھی کی تھی اور ان کے جسم پر مختلف قسم کے نشانات بھی پائے گئے ہیں ۔ اس واقعہ سے پہلے ہی ان کے پیٹ میں موجود بچے بھی جان سے چلے گئے اور اس طرح واقعہ میں موت کے منہ میں جانے والوں کی تعداد 11 سے بڑھ کر 13 ہوگئی ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.