افغانستان ویمن فٹبال ٹیم اہلخانہ سمیت لندن پہنچ گئی ،

لندن (ویب ڈیسک)تالبان کے افغانستان کا اقتدار سنبھالنے کے بعد وہاں سے افغان خواتین فٹبالرز اور ان کی فیملی جمعرات کو علی الصباح لندن کے اسنسٹڈ ائرپورٹ پہنچ گئیں۔ اس فلائٹ کے ذریعے 35افغان خواتین فٹبالرز اور ان کے اہلخانہ برطانیہ پہنچے، جن کی کل تعداد 130تھی۔ ایک فائونڈیشن کے مطابق صبح 4 بجے پہنچنے والی

یہ فٹبالرز اور ان کے اہلخانہ افغانستان سے ان کی قبولیت کے بعد 30 دن کے عارضی ویزوں پر پاکستان میں قیام پزیر تھے اور اگر کوئی ملک انہیں قبول نہیں کرتا تو انہیں واپس افغانستان بھیج دیا جاتا۔ انہیں نجی فنڈز کے ذریعے ایک چارٹر فلائٹ سے یوکے لایا گیا، جہاں وہ ایک ہوٹل میں10دن کے قرنطینہ کے بعد اپنی نئی زندگی کا آغاز کریں گی۔ ایک فاؤنڈیشن کی چیف ایگزیکٹو آفیسر سوئی اینی گل نے ان کی برطانیہ منتقلی میں مدد دینے والوں کیلئے تشکر کا اظہار کرتے کہا کہ ان کی بدولت ہم ان بچیوں کو ان کی جدوجہد کے ضائع نہ ہونے کا یقین دلانے میں کامیاب ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے امید ہے کہ اپنی زندگی میں دوسرا موقع پانے والی یہ فٹبال فیملی اپنے سکواڈ کیلئے معاون ثابت ہوگی۔ اس گروپ میں 12 سال سے 23 سال عمر کی کھلاڑی شامل ہیں، جنہیں ایک چیرٹی نے 100 پونڈ کے لوڈ کے ساتھ موبائل فونز بھی دیئے ہیں۔ دریں اثناء ایک حکومتی ترجمان نے کہا کہ دوسروں کی طرح ہم افغانستان سے افغان گرلز فٹبال ٹیم کو بھی برطانیہ لے کر آئے ہیں، جنہیں یہاں گرم جوش خیرمقدم کیا جائے گا اور حمایت و رہائش فراہم کی جائے گی، حکومت افغانستان چھوڑنے والے ہر فرد، خصوصاً کمزور خواتین اور لڑکیوں کو خطرات سے بچانے کیلئے ان کی ہر ممکن مدد کیلئے اپنے عزم پر کاربند ہے۔بتایا جا رہا ہے کہ افغان ویمن فٹبال ٹیم کو انکے اہل خانہ سمیت لندن بلوانے کے لیے نامور اداکارہ کم کاردیشن نے اخراجات ادا کیے ہیں ۔

Comments are closed.