افغانستان کے لیے کروڑوں ڈالر امداد کا اعلان

واشنگٹن (ویب ڈیسک) تالبان سیاسی دفتر کے ترجمان سہیل شاہین نے بین الاقوامی برادری سے افغان شہریوں کے لیے منظور شدہ امداد اور افغانستان کے 10 ارب ڈالر کے منجمد اثاثے فوری جاری کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ سوشل میڈیا پر بیان میں سہیل شاہین کا کہنا تھا کہ موسم سرما میں افغان شہریوں کو

بین الاقوامی انسانی امداد کی فوری ضرورت ہے ، جی20 اجلاس میں افغانستان کے لیے منظور ایک ارب 20 کروڑ ڈالر کی امداد فوری تقسیم ہونی چاہیے ۔ سہیل شاہین نے بین الاقوامی برادری سے افغانستان کے 10 ارب ڈالر کے منجمد اثاثے بھی فوری جاری کرنے کا مطالبہ کیا۔ دوسری جانب امریکہ نے مسائل میں گھرے افغان عوام کے لیے انسانی ہمدردی کی بنیاد پر 144 ملین ڈالر مالی امداد کا اعلان کردیا۔اس طرح شورش زدہ ملک کے لیے امریکا کی رواں برس مجموعی مالی امداد 474 ملین ڈالر ہوجائے گی۔اضافی مالی امداد کا اعلان امریکہ کے وزیر خارجہ بلنکن نے کیا تاہم ساتھ ہی یہ بھی واضح کیا کہ مالی امداد کی رقم تالبان حکومت کے ذریعے نہیں بلکہ اقوام متحدہ کے مختلف اداروں، عالمی ادارہ صحت اور انسانی ہمدردی کے لیے کام کرنے والی این جی اوز کے ذریعے تقسیم کی جائے گی۔امریکی وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ ایک سال میں 474 ملین ڈالر کی مالی امداد سے امریکہ دنیا کا واحد ملک بن گیا ہے جس نے افغان عوام کے لیے اتنی بھاری مالی امداد کی ہو۔