افغان سفیر کی بیٹی اور گھر والوں کے بیانات میں تضاد

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان میں تعینات افغانستان کے سفیر کی بیٹی کے مبینہ اٹھا لیے جانے اور زدوکوب کا نشانہ بننے کے معاملے پر وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد کا موقف بھی آگیا۔نجی ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق شیخ رشید نے کہا ہے کہ افغان سفیر کی بیٹی نے خود ٹیکسی بک کی تھی،

اس سے پہلے کسی سفیر کے اہلخانہ کے یوں پرائیویٹ ٹیکسی ہائر کرنے کا واقعہ پیش نہیں آیا۔ پہلے کہا گیا کہ ٹیکسی موبائل فون سے بک کرائی گئی لیکن پھر کہا گیا کہ فون گھر پر تھا، ایک موقف یہ بھی آیا کہ مبینہ ملزمان موبائل فون اپنے ساتھ لے گیا۔وزیر داخلہ کے مطابق افغان سفیر کی بیٹی کو مبینہ طور پر اٹھا لے جائے جانے کے واقعے میں دو ٹیکسیوں کا ذکر ہے۔ ایک ٹیکسی وہ ہے جس میں بدتمیزی کی گئی جب کہ دوسری وہ ٹیکسی ہے جس نے افغان سفیر کی بیٹی کی مدد کی۔ اس ٹیکسی ڈرائیور کو 500 روپے انعام بھی دیا گیا۔ دوسرے ٹیکسی ڈرائیور کو ٹریس کرلیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ واقعے کی تحقیقات جاری ہیں، مزید کارروائی افغان سفیر کی بیٹی کے تحریری بیان پر کی جائے گی۔ فی الحال اس واقعے کا کوئی دوسرا پہلو نظر نہیں آتا۔خیال رہے کہ گزشتہ روز افغان سفیر کی بیٹی کو اس وقت اٹھایا گیا تھا جب وہ اپنے چھوٹے بھائی کیلئے تحفہ خریدنے اسلام آباد کے بازار میں گئی تھی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *