انا للہ وانا الیہ راجعون: کورونا وائرس نے دو نامور شخصیات کی جان لے لی

لاہور(ویب ڈیسک) جناح ہسپتال لاہورکے سینئر رجسٹرار ڈاکٹر مشرف اقبال کورونا کے باعث انتقال کرگئے ہیں ۔نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ملک بھر میں عالمی وباکورونا وائرس کے وارجاری ہیں ،پنجاب میں کورونا وائرس سے ایک اورڈاکٹر انتقال کرگیا،جناح ہسپتال کے سینئر رجسٹرار ڈاکٹر مشرف اقبال آئی سی یو میں زیر علاج تھے

،ڈاکٹر مشرف میڈیکل یونٹ ٹو میں فرائض انجام دے رہے تھے ۔ دوسری جانب ایک اور خبر کے مطابق پنجاب یونیورسٹی کے مشہور پروفیسر مغیث الدین شیخ انتقال کر گئے ہیں جو کافی عرصے سے علیل اور وینٹی لیٹر پر تھے۔پروفیسر مغیث الدین شیخ پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ ابلاغیات کے ڈین بھی رہے۔اس کے علاوہ مغیث الدین شیخ کئی تعلیمی اداروں میں تدریسی خدمات بھی سرانجام دیتے رہے۔کورونا وائرس کے باعث وہ نجی ہسپتال میں زیرعلاج تھے ، طبیعت بگڑنے پر گزشتہ روز انہیں وینٹی لیٹر پر منتقل کردیا گیا اور آج پروفیسر ڈاکٹر مغیث الدین شیخ ، اپنے اہلخانہ اور شعبہ صحافت سے وابستہ ہزاروں صحافیوں کو سوگوار چھوڑ گئے ۔ملک کی کئی سرکاری ونجی یونیورسٹیوں اور کالجز میں شعبہ صحافت کے قیام میں بنیادی کردار ادا کیا۔ ان دنوں بھی وہ لاہور کی ایک نجی یونیورسٹی سے وابستہ تھے ۔ کچھ روز پہلے ، پروفیسر ڈاکٹر مغیث الدین شیخ نے ،سوشل میڈیا پر اپنے چاہنے والوں کو اطلاع دی کہ وہ کورونا وائرس کا شکار ہوگئے ہیں اور ہسپتال میں زیرعلاج ہیں ۔گزشتہ روز طبیعت بگڑنے پر انہیں وینٹی لیٹر پر منتقل کردیا گیا جہاں وہ ،اپنے اہلخانہ سمیت میڈیا سے وابستہ ہزاروں صحافیوں اور اساتذہ کو سوگوار چھوڑ کر چلے گئے ۔پاکستان میں پہلی میڈیا یونیورسٹی کا قیام پروفیسر ڈاکٹر مغیث الدین شیخ کا خواب تھا ، ان کی کوششوں سے پرویز مشرف دور میں اسلام آباد میں میڈیا یونیورسٹی کے قیام کیلئے کچھ اقدامات بھی سامنے آئے لیکن پروفیسر ڈاکٹر مغیث الدین شیخ کا یہ خواب عملی صورت اختیار نہ کرسکا کورونا وائرس نے ایک اور جان لے لی ۔ڈاکٹر مغیث الدین شیخ سپریئر یونیورسٹی میں بھی شعبہ صحافت کے سربراہ کے طور پر وابستہ رہے ، اس کے علاوہ وہ کئی غیر ملکی یونیورسٹیوں میں بھی پڑھاتے رہے ۔ کورونا وائرس کا شکار ہونے سے پہلے تک وہ شعبہ تدریس سے جڑے رہے ۔۔۔

Sharing is caring!

Comments are closed.