اگر مریم نواز گرفتار ہو گئیں تو کیا ہو گا ؟

لاہور(ویب ڈیسک)مسلم لیگ(ن) کا مال روڈ پر پہلا احتجاجی جلسہ ریہرسل ثابت ہوا،اگر جلسے کے زمینی حقائق کا جائزہ لیا جائے تو سچ تو یہ ہے کہ مسلم لیگ (ن) کارکنوں میں جوش و جذبہ پیدا کرنے میں بری طرح ناکام رہی جس کی بڑی وجہ قیادت کا موجود نہ ہونا تھا

دوسرا سچ یہ ہے کہ ن لیگ کی قیادت کا اپنا آبائی شہر ہونے کے باوجود حقیقی باسی باہر نہ نکلے جبکہ زیادہ تر تعداد لاہور سے باہر قر ب و جوار سے گاڑیوں میں جمع کرکے لائی گئی جس سے جلسے میں رنگ نہ جم سکا۔ اس جلسہ کے بعد دیگر شہروں میں ن لیگ بڑے جلسے کرنے کا ارادہ رکھتی ہے وہ کسی نے خوب کہا ہے کہ ”پہلا تاثر ہی آخری تاثر ہوتا ہے“ اگرچہ حکومت پنجاب لاہور میں مسلم لیگ (ن) کے پہلے احتجاجی جلسہ سے اندر سے ڈری ہوئی تھی جس کا ثبوت یہ ہے کہ وزیر اعلی پنجاب سردار عثمان بزدار ہدایات لینے جلسہ سے ایک روز قبل اسلام آباد پہنچ گئے جہاں انہوں نے وزیر اعظم سے بھی ملاقات کی اور ان کی کچن کابینہ سے بھی مشورے کئے تاہم ان کا اس بات پر اتفاق رائے سود مند ثابت ہوا کہ ن لیگ کو فری ہینڈ دیا جائے۔یہ فیصلہ دانشمندانہ ثابت ہوا،اگر حکومت ن لیگ کے جلسہ کو مداخلت کرکے زور بازو سے روکنے کی کوشش کرتی تو ن لیگ کو وہ نتائج ملتے جو آج پہلے احتجاجی جلسے سے نہ مل سکے۔لاہور کی معروف شاہرہ مال روڈپر واقع ریگل چوک سے ملحقہ ٹیمپل روڈ جلسہ گا ہ کیا تھی ایک تنگ گلی،جس کا چوتھائی حصہ بھی لوگوں سے نہ بھر سکا،تاہم حکومت نے حفاظت کے بہترین انتظامات کررکھے تھے۔سٹیج مزدہ ٹرک پر بنایا گیا۔کل کے جلسہ نے یہ ثابت کردیا کہ مسلم لیگ (ن) کے احتجاجی جلسوں میں رونق نوازشریف اور مریم نواز کے دم سے ہی ممکن ہے۔لوگوں کو اکٹھا کرنا سیکنڈ لائن قیادت کے بس کی بات نہیں۔تاہم یہ بات درست ہے کہ مسلم لیگ (ن)نے احتجاجی جلسہ منعقد کرکے نہ صرف ریہرسل مکمل کرلی ہے بلکہ اپنی جھجک بھی دور کرلی ہے۔جلسہ کی حیران کن بات یہ ہے کہ یوں اپوزیشن جماعتیں احتجاجی تحریک کے لئے پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کا نام استعمال کررہی ہے لیکن لاہور میں ہونے والے جلسے میں ن لیگ کے علاوہ کسی جماعت نے اس طرف آنا بھی مناسب نہ سمجھا جس سے ثابت ہوگیا کہ مستقبل قریب میں مسلم لیگ (ن) کو اکیلے ہی احتجاج کا سفر طے کرنا ہوگا۔جلسہ گاہ میں ن لیگ کی طرف سے ہی احتجاجی بینرز آویزاں کئے گئے تھے۔ 

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *