ایسا خواب جو انسان کی اصلیت بیان کرتا ہے۔۔

تاریکی اور اندھیرے کا خوف انسان کو پریشان بھی کرتا ہے خاص طور پر جب خواب میں تاریکی اور سیاہی نظر آنے لگے تو وسوسے اسکے دل میں پھوٹنے لگتے ہیں اور وہ سوچتا ہے کہ اسے اندھیرا کیوں نظر آیا خواب میں.یہ پریشانی کی بات ہے لیکن اتنی بھی کہ انسان ہلکان ہوجائے.

اس کا انحصار تاریکی کی نوعیت پر ہوتاہے..خواب میں کوئی دیکھے کہ اس نے تاریکی خود لی ہے تو ایسا انسان گمراہی کا شکار ہوگا ،اگر یہ دیکھے کہ پہلے تاریکی میں تھا پھر روشنی میں آگیا ہے تو اسے توبہ نصیب ہوگی .بدنصیبی کا دور ختم ہوگا.لیکن یہ دیکھے کہ تاریکی کے بعد روشنی میں آنے کے بعد پھر تاریکی میں چلا گیا ہے تو ایسا شخص منافق ہونے کی دلیل ہے.اگر یہ دیکھے کہ ہر سو گہری تاریکی ہے تو یہ کسی بڑے غم کی علامت ہے جو اس ملک یا شہر والوں کو نصیب ہوگا .کاروبار کو شدید نقصان ہوگا.اگر کوئی مذہبی انسان دیکھے کہ وہ تاریکی میں گیا ہے تو وہ بدعات میں مبتلا ہوگا.خواب میں تاریکی دیکھ کر ڈر گیا ہے تو ایسا انسان گمراہی اور برے کاموں میں مبتلا ہوگا لیکن شرمندہ بھی .تاریکی ہلکی ہے اور اسے چیزیں دکھائی بھی دیتی ہیں تو ایسا انسان برے کاموں اور پریشانیوں کی وجہ سے جو غم اٹھائے گا اس سے نکلنے کا راستہ ملنے کی اسے امید ہوتی ہے.ایسا انسان دراصل جان بوجھ کر ایسے کام کرتا ہے جو غلط ہوتے ہیں اور انکے نتائج اسے معلوم ہوتے ہیں (واللہ اعلم الصواب)۔ دوسری جانب قرآن کریم کی معروف اصطلا حات میں سے ایک اصطلاح منافق بھی ہے۔ اسلامی سو سائٹی میں جو عناصر بظاہر مسلمان نظر آتے ہیں لیکن باطن میں وہ اسلام کے سخت ترین دشمن ہیں، ایسے افراد کو منافق کے عنوان سے یاد کیا جاتا ہے یعنی یہ’’ دوست نما دشمن‘‘ کا کردار کرتے ہیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *