ایسے حقائق جن سے آپ یقیناً ناواقف ہونگے

اسلام آباد (ویب ڈیسک)30 مئی 1998 کے صحرائے خاران میں پاکستان کے گہرے کنوئیں (SHAFT) میں کئے گئے پاکستان ایٹمی توانائی کمیشن کے پہلے ایٹمی تجربے کی 23 ویں سالگرہ منائی گئی۔ پانچ ایٹمی تجربات 28 مئی 1998 کو چاغی کے راسکو پہاڑ میں جنرل ضیاء الحق کے دور میں بنائی گئی ایک کلومیٹر طویل زگ زیگ

سرنگ میں کامیابی سے کئے گئے۔ یہ تجربات کرنے والی ٹیم کے سربراہ پاکستان ایٹمی توانائی کمیشن کے چیئرمین ڈاکٹر اشفاق احمد کی وساطت سے مقرر کئے گئے قائد ڈاکٹر ثمر مبارک مند نے کئے۔پاکستان آرمی کے ایک پورے بریگیڈ جس کے قائد اس وقت کے بریگیڈیئر ندیم تاج تھے ، اس بریگیڈ میں 3 ہزار فوجی افسر وجوان تھے جنہوں نے چاغی اور خاران کے پورے علاقے کو حفاظت فراہم کی۔ پاکستان ایئر فورس کا ملک کو اسلامی دنیا کی پہلی اور باقی دنیا کی ساتویں ایٹمی قوت بنانے میں جو رول رہا وہ آج تک تادم تحریر قوم سے اوجھل رہا۔ پاک فضائیہ کے طیارے سنمگلی ائربیس شہباز ائربیس پر ائر ٹو ائر ہتھیاروں سے لیس مشن بیدار 98 کے دوران دو ہفتے تک مامور رہے اور فضائی نگرانی ایسے کرتے رہے جیسے وہ مشقیں کر رہے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *