ایک دلچسپ تحریر جو آپ کا موڈ خوشگوار کردے گی

لاہور (ویب ڈیسک) نامور کالم نگار علی عمران جونیئر اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔ایک عورت، مرد سے اس سوچ سے شادی کرتی ہے کہ وہ بدل جائے گا لیکن وہ نہیں بدلتااورایک مرد عورت سے یہ سوچ کر شادی کرتا ہے کہ یہ نہیں بدلے گی اور وہ بدل جاتی ہے۔۔

مردکے الماری میں دو قسم کے ملبوسات ہوتے ہیں، سردیوں کے یا پھر گرمیوں کے۔۔جب کہ عورت کے لئے ہمیشہ یہی مسئلہ رہتا ہے کہ پہننے کے لئے کپڑے نہیں اور رکھنے کے لئے جگہ نہیں۔۔عورت ہمیشہ شاپنگ کے لیے، پودوں کو پانی دینے کے لیے،صفائی ستھرائی کے لئے، صبح کے الگ، شام کے الگ اور سونے کے لئے الگ لباس کا خیال کرے گی، ڈریس اپ ہو گی۔مرد صرف شادی یا جنازے کے لیے ہی تیار ہوتا ہے۔مرد کو صبح ساڑھے سات جانا ہے وہ سات بجے اٹھ کر تیار ہو جائے گااورعورت کو اگر کہیں ساڑھے سات جانا ہے تو تیار ہونے کے لیے پانچ بجے اٹھنا پڑے گا۔مرد کو اپنا آپ آئینے کے سامنے کھڑا ہو کر باڈی بلڈر لگتا ہے چاہے وہ موٹا ہو اورعورت کو اپنا آپ ہمیشہ ہی موٹا لگتا ہے چاہے وہ اسمارٹ ہوں۔ہمارے پیارے دوست نے لڑکیوںپر کچھ تحقیق کی ہے، وہ لکھتے ہیں کہ ۔۔خوبصورت لڑکیاں زیادہ تر نالائق ہوتی ہیں۔۔جن لڑکیوں کا قدا سٹینڈ والے پنکھے سے بھی چھوٹا ہوتا ہے وہ حد سے زیادہ خوبصورت ہوتی ہیں۔۔رشتہ آنے پر جو لڑکیاں یہ ایکسکیوز کرتی ہیں کہ ماما میں نے ابھی آگے پڑھنا ہے وہ میٹرک میں چار بار فیل ہوئی ہوتی ہیں۔۔جو لڑکیاں جتنا ’’ایٹی ٹیوڈ‘‘ دکھاتی ہیں وہ اُتنی ہی’’ کوجی ‘‘ہوتی ہیں۔۔ جو لڑکی اپنی تعریفوں کے پُل باندھے سمجھ جاؤ وہ پاپا کی ڈول آنٹی ہے ۔۔ایک اندازے کے مطابق شہر کی لڑکیوں میں کوئی خوبصورتی نہیں رہی اصلی خوبصورتی تو’’پنڈ‘‘ کی لڑکیوں میں ہوتی ہے جو فیس بک استعمال ہی نہیں کرتی۔۔باقی لڑکے معصوم ،شریف، ہینڈسم ،باکردار تھے، ہیں اور ہمیشہ رہیں گے۔۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *