ایک مالدار عورت آئی تھی وہ کہنے لگی ۔۔۔۔

لاہور (ویب ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کی رہنما مسرت جمشید چیمہ کے بچوں کو کھانے میں ملا کر کچھ دینے کے معاملے میں اہم پیشرفت سامنے آگئی۔ زیر حراست ملازم نے اپنے جرم کا اعتراف کرلیا۔نجی ٹی وی چینل کی ایک رپورٹ کے مطابق زیر حراست ملازم نے انکشاف کیا ہے کہ انہیں

ایک خاتون نے مسرت جمشید چیمہ کے پورے گھر والوں کو خطرناک چیز کھلانے کا کہا تھا۔ خاتون نے کہا کہ اگر پورے گھر والوں کو وہ چیز کھلا دو تو مکان لے دوں گی۔ملازم کے مطابق خاتون تصویر بنانے کے بہانے گھر میں آئی تھی۔ لالچ میں آکر اس کے پلان میں شامل ہوگئے۔ باورچی نے کھانے میں کچھ ملا کر بچوں کو کھلایا۔ایس ایس پی انویسٹی گیشن کے مطابق پولیس نے خاتون کو حراست میں لے کر شامل تفتیش کرلیا ہے جس کے بعد مزید حقائق سامنے آئیں گے، پولیس کو فرانزک رپورٹ کا بھی انتظار ہے۔خیال رہے کہ کچھ روز پہلے مسرت جمشید چیمہ اور جمشید اقبال چیمہ کے بچوں کو کھانے میں ملا کر کچھ دے دیا گیا تھا۔ بچوں کو انتہائی تشویشناک حالت میں ہسپتال منتقل کیا گیا تھا تاہم ڈاکٹرز نے ان کی جان بچالی۔

Comments are closed.