باپ کی گارڈین شپ سے نکلتے ہی برٹنی سپیئرز نے پر پرزے نکالنا شروع کر دیے ، حیران کن اطلاعات

نیویارک(ویب ڈیسک) امریکی گلوکارہ برٹنی سپیئرز اپنے باپ کی گارڈین شپ کے خلاف 13سال طویل قانونی لڑائی بالآخر جیت کر آزاد ہو چکی ہیں، جس کے بعد اب وہ اپنی مرضی کی زندگی گزار سکتی ہیں۔ عدالت کی طرف سے ان کے والد جیمی کی گارڈین شپ ختم کرنے کا فیصلہ آنے

پر برٹنی سپیئرز کا ردعمل کیا تھا؟ اس حوالے سے گلوکارہ نے ایسی بات بتا دی ہے کہ سن کر ان کے مداحوں کی آنکھیں نم ہو گئیں۔ ڈیلی سٹار کے مطابق برٹنی سپیئرز نے بتایا ہے کہ ”جب میں نے سنا کہ اب بالآخر 13سال بعد میں گارڈین شپ کی قید سے رہا ہو چکی ہوں تو میں پھوٹ پھوٹ کر رونے لگی۔ مجھے اس قدر رونا آیا کہ دو گھنٹے تک میں روتی چلی گئی۔“رپورٹ کے مطابق گزشتہ ہفتے عدالت کی جج برینڈا پینی نے برٹنی کے والد جیمی سپیئرز کی گارڈین شپ ختم کرتے ہوئے برٹنی کو اپنے معاملات کا اختیار دے دیا تھا۔ 13سال قبل برٹنی سپیئرز کی دگرگوں ذہنی صحت کے پیش نظر عدالت نے اسے اپنے باپ کی گارڈین شپ میں دے دیا تھا۔ وہ اپنے باپ کی مرضی کے بغیر کوئی بھی کام نہیں کر سکتی تھیں۔ ان کا باپ انہیں چند سو ڈالر فی ہفتہ خرچ دیتا تھا۔ وہ اپنے بینک اکاؤنٹس تک رسائی نہیں رکھتی تھیں اور نہ ہی گھر سے باہر اپنی مرضی سے جا سکتی تھیں۔ ان کی گارڈین شپ کے خاتمے کے لیے ان کے مداحوں نے حالیہ سالوں میں مہم چلائی تھی۔ ٹوئٹر کے ذریعے 39سالہ گلوکارہ نے اپنی حمایت میں باہر نکلنے والے مداحوں کا شکریہ ادا کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ”میرے پاس الفاظ نہیں ہے۔ آج میں آپ لوگوں کی مسلسل مزاحمت اور حمایت کی وجہ سے ہی کنزرویٹو شپ سے آزاد ہوئی ہوں۔“گارڈین شپ سے رہائی کے بعد برٹنی سپیئرز کی طرف سے ایک شرمناک تصویر بھی انسٹاگرام پر پوسٹ کی گئی ہے جس میں وہ صرف ایک زیرجامے میں ہوتی ہیں۔