بریکنگ نیوز: وزیراعظم عمران خان کے مشیر شہزاد اکبر نے استعفیٰ دے دیا

لاہور(ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان کے مشیر برائے احتساب اور امورِ داخلہ بیرسٹر شہزاد اکبر نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔آج ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ انھوں نے وزیراعظم کو اپنا استعفیٰ دے دیا ہے اور وہ نیک نیتی سے امید رکھتے ہیں کہ

ملک میں وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں پاکستان تحریکِ انصاف کے منشور کے مطابق احتساب کا عمل جاری رہے گا۔ان کا کہنا تھا کہ وہ پاکستان تحریکِ انصاف سے منسلک رہیں گے اور بطور قانون دان بھی کام کرتے رہیں گے۔پاکستانی ذرائع ابلاغ اور سوشل میڈیا پر یہ خبریں گذشتہ ہفتے سے گرم تھیں کہ وزیراعظم عمران خان نے شہزاد اکبر کو ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے تاہم اس وقت وزیراعظم کے ترجمان برائے سیاسی روابط شہباز گل نے اب خبروں کو غلط قرار دیا تھا۔شہزاد اکبر کے استعفے پر تبصرہ کرتے ہوئے وزیرِ اطلاعات فواد چوہدری نے انھیں مخاطب کرتے ہوئے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ شہزاد اکبر نے شدید دباؤ میں اپنا کام کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ’گروہوں سے ٹکر لینا کبھی بھی آسان نہیں تھا لیکن جیسے آپ نے کام کیا اور مقدمات کو نمٹا وہ قابلِ تحسین ہے۔‘ادھر اپوزیشن کی جماعت پاکستان مسلم لیگ ن کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل عطا اللہ تارڑ نے استعفے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’کیا شہزاد اکبر سے قوم کا پیسہ اور وقت ضائع کرنے کا حساب لیا جائے گا؟ ایسٹ ریکوری یونٹ نے قوم کے اربوں روپے خرچے اور نتیجہ کچھ نہ نکلا۔‘شہزاد اکبر پیشے کے اعتبار سے وکیل ہیں اور 2018 کے انتخابات میں پی ٹی آئی کی جیت کے بعد 20 اگست 2018 کو شہزاد اکبر کو وزیراعظم کا معاونِ خصوصی برائے احتساب مقرر کیا گیا تھا۔ستمبر 2018 میں انھیں بیرونِ ملک اثاثوں کی نشاندہی اور حصول کے لیے قائم کردہ ایسٹ ریکوری یونٹ کا سربراہ بنا دیا گیا تھا جبکہ جولائی 2020 میں انھیں وزیراعظم کا مشیر مقرر کیا گیا تھا اور انھیں وزیر اعظم عمران خان کے احتساب کے دعوے پر عملدرآمد کی کوششوں کا سرخیل سمجھا جاتا تھا۔

Comments are closed.