تہلکہ خیز حقائق

لاہور (ویب ڈیسک) ۔نامور کالم نگار فضل حسین اعوان اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔ جہاں تک ان کے کاروباری مفادات کا تعلق ہے، شوگر ملز کیلئے انجینئرز بھارت سے آیا کرتے تھے۔ اس حوالے سے سلمان شہباز کا ہر ماہ ایک بار تو فون لازمی آتا تھا۔میاں نواز شریف کی سجن جندال سے دوستی تھی،

انکی خواہش تھی، سجن جندال پاکستان کی کول(کوئلہ) انڈسٹری میں سرمایہ کاری کریں۔جندال بھارت کے دوسرے بڑے سٹیل ٹائیکون ہیں۔ وزیراعظم مودی کی حلف برداری تقریب میں شرکت کیلئے نوازشریف بھارت آئے توجندال ائیر پورٹ پر موجود تھے۔نواز شریف اور جندال میںدوستی اور فیملی ریلیشن شپ ہے۔( مریم نواز کا جندال کے ساتھ خاندانی دوستی کا بیان ریکارڈ پر موجود ہے۔) 26 اپریل2017ء کو سجن جندال پاکستان آئے تھے۔ کچھ لوگوں نے کہا کہ بغیر ویزے کے آ گئے۔باسط کے مطابق جندال اور ساتھیوں کیلئے مجھے وزارتِ خارجہ نے ویزہ جاری کرنے کی ہدایات دی تھیں۔صرف لاہور اور اسلام آباد کا ویزہ تھالیکن وہ مری پہنچ گئے۔ وہیں نواز شریف سے ملاقات ہوئی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.