تہلکہ خیز دعویٰ کردیا گیا

کراچی (ویب ڈیسک)نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں میزبان منیب فاروق سے گفتگو کرتے ہوئے طارق فضل چوہدری نے کہا کہ گیارہ میں سے دس ضمنی الیکشن ہارنے کے بعد پی ٹی آئی کس طرح مقبولیت کا دعویٰ کررہی ہے، پیپلز پارٹی کے رہنما نبیل گبول نے کہا کہ چوہدری نثار

کوشاید عثمان بزدار کی حکومت کیلئے خطرہ سمجھا جارہا تھا اس لئے انہیں حلف اٹھانے سے روکا گیا۔ ن لیگ کے رہنما ڈاکٹر طارق فضل چوہدری نے کہا کہ پی ڈی ایم نے جلسوں کے ذریعہ عوام میں آگاہی پیدا کی، پیپلز پارٹی سے اختلاف لانگ مارچ سے پہلے استعفے دینے کی بات پر ہوا،شہباز شریف اس وقت قید میں تھے اب باہر آگئے ہیں، شہباز شریف نے اپوزیشن جماعتوں کے لیڈرز کو عشائیہ دیا تھا، پی ڈی ایم اجلاس کا بہت جلد متوقع ہے، پیپلز پارٹی نے سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر بننے کیلئے حکومتی اتحادی جماعت کی سپورٹ حاصل کی اس پر ہمارے تحفظات آج بھی ہیں۔طارق فضل چوہدری نے کہا کہ گیارہ میں سے دس ضمنی الیکشن ہارنے کے بعد پی ٹی آئی کس طرح مقبولیت کا دعویٰ کررہی ہے، معیشت کی بہتری کا اصل اشاریہ عوام کو فائدہ پہنچنا ہوتا ہے، حکومت کی پالیسیوں سے مڈل مین پیسے کمارہے ہیں عوام پس رہے ہیں۔ طارق فضل چوہدری کا کہنا تھا کہ چوہدری نثار کس وجہ سے حلف نہیں لے سکے اس پر تبصرہ کرنے کی پوزیشن میں نہیں ہوں،پیپلز پارٹی کے رہنما نبیل گبول نے کہا کہ شہباز شریف کا عشائیہ پیپلز پارٹی اور ن لیگ کے اختلافات ختم کرنے کیلئے پہلا قدم ہے، شہباز شریف چاہتے ہیں پیپلز پارٹی دوبارہ پی ڈی ایم کا حصہ بنے، عشائیہ میں پیپلز پارٹی اور ن لیگ نے ایک دوسرے سے شکایات کیں،ن لیگ اور پی پی رہنماؤں کے ساتھ کھانا کھانے سے برف پگھلی ہے، آئندہ پیپلز پارٹی اورن لیگ کی طرف سے ایک دوسرے کیخلاف بیانات نہیں آئیں گے۔ نبیل گبول کا کہنا تھا کہ حکومت کو مدت پوری کرنے دی جائے یہ اپنے وزن سے گر جائے گی، ضمنی انتخابات کے نتائج سے پی ٹی آئی کی عوام میں مقبولیت کا بھانڈہ پھوٹ گیا ہے، عمران خان چاہتے ہیں اسمبلیاں توڑی جائیں اور قبل از وقت انتخابات ہوں، 2023ء میں انتخابات ہوئے تو پی ٹی آئی 10نشستیں بھی نہیں جیت سکے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *