جب اداکار اجے دیوگن ماہیما چوہدری کے لیے بڑے بڑوں کے سامنے کھڑے ہو گئے

ممبئی(ویب ڈیسک) بولی وڈ اداکارہ ماہیما چوہدری نے اجے دیوگن کے ساتھ تعلقات پر خاموشی توڑدی۔ماہیما چوہدری اور اجے دیوگن نے 1999 میں فلم ’’دل کیا کرے‘‘میں ایک ساتھ کام کیا تھا۔ یہ فلم اجے اینڈ کاجول پروڈکشن ہاؤس کی فلم تھی اور اسی فلم کی عکسبندی کے دوران دونوں کے درمیان تعلقات کی

خبریں میڈیا پر پھیلی تھیں۔حال ہی میں دئیے گئے ایک انٹرویو میں ماہیما چوہدری نے اپنے اور اجے دیوگن کے اسکینڈل کے بارے میں بات کی اور اپنے اور اجے دیوگن کے درمیان تعلقات کی خبروں کو من گھڑت اور بے بنیاد قرار دیتے ہوئے اسے ایک ہدایت کار کا کام قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا ہمارے اسکینڈل کی خبریں اس وقت پھیلیں جب میرے ایکسیڈنٹ کے بعد اجے دیوگن ایک ہدایت کار کے سامنے میرے لیے کھڑے ہوگئے تھے۔بھارتی میڈیا کے مطابق ماہیماچوہدری کا بنگلور میں فلم ’’دل کیا کرے‘‘کی عکسبندی کے آخری روز ایکسیڈنٹ ہوگیا تھا جس میں ان کے چہرے پر گہرے زخم آئے تھے۔ اس ایکسیڈنٹ کی وجہ سے ان کے صحت یاب ہونے تک ان کی فلم کی عکسبندی بھی روک دی گئی تھی۔ تاہم کچھ ڈائریکٹرز اپنی فلموں کی عکسبندی روکنے کے لیے تیار نہیں تھے۔ ایکسیڈنٹ کے بعد جب ماہیما چوہدری فلم کے سیٹ پر گئیں تو انہوں نے فلم کے ڈائریکٹر سے درخواست کی کہ چہرے کے زخموں کی وجہ سے وہ ان کے قریب کے شاٹ نہ لے ۔ پہلے تو ڈائریکٹر مان گیا لیکن بعد میں ان کے چہرے کے قریب سے شاٹس لینے لگا۔ماہیما چوہدری نے بتایا کہ اجے دیوگن نے ڈائریکٹر کی اس حرکت کو نوٹس کرلیا تھا اور انہوں نے ماہیما سے پوچھا تم ابھی کام کے لیے تیار نہیں ہو؟ جس پر اداکارہ نے کہا نہیں۔ تو اجے دیوگن نے ڈائریکٹر سے کہا ماہیما ابھی ابھی ایکسیڈنٹ سے نکلی ہے۔ فلم کی عکسبندی کے لیے تھوڑا انتظار بھی کیا جاسکتا ہے جس پر ڈائریکٹر نے کہا ماہیما کے نہ ہونے کی وجہ سے سیٹ کو ختم کرنا پڑے گا تو اجے دیوگن نے کہا کوئی بات نہیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *