جنرل بپن راوت کی اہلیہ مدھولیکا راوت کے حوالے سے چند حیران کن حقائق

نئی دہلی(ویب ڈیسک) بھارتی ریاست تامل ناڈو میں ہونے والے بھارتی فضائیہ کے ایم آئی-17 وی فائیو ہیلی کاپٹر میں بھارتی ڈیفنس چیف بپن راوت کے ساتھ ان کی اہلیہ مدھولیکا راوت بھی حادثے کا شکار ہوکر دنیا سے رخصت ہوگئیں۔مدھولیکا راوت مدھیہ پردیش کے ضلع شاہدول کی رہنے والی تھیں، اُن کے والد

مرگیندر سنگھ کانگریس پارٹی سے بھارت کی قانون ساز اسمبلی کے رکن بھی رہ چکے ہیں۔مدھولیکا راوت نے شاہدول سے ہی اپنی ابتدائی تعلیم حاصل کی اور بعد ازاں دہلی یونیورسٹی سے نفسیات میں ماسٹرز کیا۔انہوں نے 1986 میں بپن راوت سے شادی کی۔ جوڑے کی دو بیٹیاں ہیں، بڑی بیٹی کی شادی ہوچکی ہے جبکہ چھوٹی بیٹی تعلیم حاصل کررہی ہے۔بپن راوت کی اہلیہ ویر نارس جیسی این جی اوز کے ساتھ بھی منسلک تھیں جو فوجی اہلکاروں کی بیواؤں، معذور بچوں اور سرطان کے مریضوں کی مدد کرتی ہے۔یہی نہیں بلکہ مدھولیکا راوت آرمی وائیوز ویلفیئر ایسوسی ایشن (اے ڈبلیو ڈبلیو اے) کی صدر تھیں جو دفاعی ارکان کے خاندانوں کی فلاح و بہبود کو محفوظ رکھتی ہے اور فوجیوں کے خاندانوں کی مدد اور ترقی میں اہم کردار ادا کرتی ہے۔خیال رہے کہ گزشتہ روز بھارتی چیف آف ڈیفنس اسٹاف جنرل بپن راوت ہیلی کاپٹر حادثے میں جان کی بازی ہارگئے ، حادثے میں ان کی اہلیہ اور عملے کے ارکان سمیت 13افراد زندگی سے محروم ہو گئے ۔ہیلی کاپٹر میں 14افراد سوار تھے ، ڈی ایس ایس سی پر ڈائریکٹنگ اسٹاف گروپ کپٹن ورون سنگھ ایس سی زخمی ہیں اور وہ اس وقت فوجی اسپتال ویلنگٹن میں زیر علاج ہیں۔بھارتی وزیر خارجہ ایس جے شنکر ، بھارتی اپوزیشن رہنما راہول گاندھی و دیگر نے بپن راوت کی موت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اسے اپنے ملک کیلئے بڑا نقصان قرار دیا۔