جہانگیر ترین دل کی بات زبان پر لے آئے

لاہور (ویب ڈیسک) تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین کا کہنا ہے ہم سب پی ٹی آئی اے کا حصہ تھے ہیں اور رہیں گے،ہم حکومت کے ساتھ ہیں، حکومت پنجاب کے دباؤ کے باعث اپنی آواز بلند کرنے کا فیصلہ کیا۔عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے جہانگیر ترین نے

کہاکہ وزیراعظم سے دوست ملے اور انہوں نے علی ظفر کو ذمہ داریاں سونپیں، امید ہے علی ظفر کی رپورٹ جلد وزیراعظم کو مل جائے گی۔جہانگیر ترین نے بتایاکہ آج دونوں ایف آئی آرز میں 31مئی تک توسیع ہوگئی ہے، عدالت نے ایف آئی اے کو تفتیش مکمل کرنے حکم دیا ہے، تینوں ایف آئی آرز میں چینی گروہوں کا کوئی ذکر نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کوئی انتقامی کارروائی نہیں ہوگی، پنجاب حکومت نے ہمارے ساتھیوں کے خلاف انتقامی کارروائیاں شروع کر دی ہیں، ہمارے ساتھیوں نے پنجاب اسمبلی میں آواز اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے۔جہانگیر ترین نے کہاکہ عمران خان نے جب کہہ دیا تو پنجاب حکومت نے انتقامی کارروائیاں کیوں کیں،ہم خیال گروپ اب اسمبلی میں بات کرے گا کہ انتقامی کارروائیاں کیوں کی گئیں۔انہوں نے کہاکہ ہم کوئی فارورڈ بلاک نہیں ہم پی ٹی آئی کا حصہ ہیں،پنجاب حکومت اپنی انتقامی کارروائی بند کرے، یہ آپ کے لوگ ہیں،انتقامی کاروائیوں کے تحت افسروں کے تبادلے کیے گئے۔رہنما پی ٹی آئی نے کہاکہ اپنے خلاف انتقامی کارروائیوں کی تفصیلات میں نہیں جانا چاہتا، ہم پی ٹی آئی سے باہر نہیں نکلے، پی ٹی آئی کے اندر ہیں، ہم حکومت کےساتھ ہیں، کوئی شک میں نہ رہے، الگ دھڑے ہر پارٹی میں ہوتے ہیں، ہم ناانصافیوں کیخلاف بات کر رہے ہیں، ہمارے گروپ کے فیصلے اجتماعی طور پر ہوں گے ۔

Comments are closed.