جی میری جان : میں بول رہی ہوں ۔۔۔۔

سکھر (ویب ڈیسک )خوبصورت نسوانی آواز کے جھانسے میں آکر دوستی کے بعد ملاقات کے بہانے بلا کر زبردستی لےجانے کی وارداتوں میں اضافہ، سکھر کے دو افراد دلفریب نسوانی آواز کا شکار ہوکر ملاقات کے لئے گئے اور مبینہ طور پر لاپتہ ہو گئے، پولیس کے مطابق تعلقہ صالح پٹ کے دیہی علاقے جنوجی کے رہائشی

دو افراد رحمت اللہ اور الطاف حسین جسکانی نسوانی آواز کے جھانسے میں آکر خواتین سے دوستی کرکے خود گھر سے گئے ہیں اور لگتا ہے کہ ان کے قابو مین آ گئے ہیں، ورثاء کا کہنا ہے کہ دونوں افراد دو روز قبل گھر سے 45 ہزار روپے اور موبائل فون کے ساتھ سبزی منڈی گئے اور واپس نہ آئے رابطہ کرنے پر دونوں افراد نے شام کے وقت بتایا کہ موبائل کی چارجنگ ختم ہوگئی ہے رات تک گھر پہنچ جائیں گے گھر نہ پہنچنے پر ورثاء نے پولیس کو رپورٹ کی اور پولیس نے ان کے نمبرز کو چیک کیا تو ان کی آخری لوکیشن شکارپور آئی ہے، متعلقہ پولیس کے مطابق واردات سکھر میں نہیں ہوئی شکارپور میں ہوئی ہے پولیس لاپتہ دونوں افراد کی بازیابی کے لئے کوششیں کررہی ہے۔ سندھ کے بعض علاقوں میں نسوانی آواز میں دوستی کرکے لوگوں کو ملاقات کے لئے بلایا جاتا ہے پھر انہیں تاوان کے لیے بٹھا لیا جاتا ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.