حکومت نے بڑی پابندیاں لگانے پر غور شروع کر دیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) ملک بھر میں کورونا وائرس بے قابو ہوگیا، گزشتہ روز وائرس سے مزید 148؍افراد جاں بحق ہو گئے، انتقال کرنے والوں میں سے 103کا تعلق پنجاب سے ہےجبکہ 46؍ اموات صرف لاہور میں ہوئیں۔ملک بھر میں کورونا وائرس کے مثبت کیسز آنے کی شرح 11.62فیصد ہو گئی، لاہور میں

یہ شرح 18، حیدرآباد 14، کراچی 13 فیصدہے، کئی شہروں میں 80 فیصد سے زیادہ وینٹی لیٹرز زیر استعمال، پہلی لہر کے مقابلے میں 30 فیصد زائد مریض آکسیجن پر ہیں،گزشتہ 24؍ گھنٹوں کے دوران مزید 5499 نئے کیسز رپورٹ ہوئے ، اس وقت ملک میں کورونا کے 83162؍ فعال کیسز ہیں جن میں 4528؍ مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔ جبکہ وفاقی وزیر اسدعمر نے واضح کیا ہے کہ صورتحال اچھی نہیں، آخری موقع ہے مواقع سنجیدگی دکھائیں، کل جمعۃ المبارک سے نئی بندشوں کا آغاز کرینگے،بڑے شہر بند کرنے پڑ سکتے ہیں، رواں ہفتہ انتہائی خطرناک ہے۔پاکستان میں وباء کے آغاز سے اب تک اس ہفتے اموات کی تعداد سب سے زیادہ ہے، مکمل لاک ڈاؤن کی طرف جاسکتے ہیں،عوام نے تعاون کیا تویہ قدم نہیں اٹھانا پڑیگا، جبکہ وزیرصحت سندھ ڈاکٹر عذرا پیچوہو کا کہنا ہے کہ سندھ میں بھی کورونا وائرس بڑھنے لگا ہے،50؍ فیصد مریضوں میں برطانوی وائرس (یو کے ویرینٹ) کی تصدیق ہوئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر منصوبہ ،ترقی اصلاحات وخصوصی اقدامات و این سی او سی کے سربراہ اسد عمر نے این سی او سی کے اجلاس کے بعد میڈیا بریفنگ میں اسد عمر نے کہا کہ این سی او سی میں کورونا صورتحال کا جائزہ لیا گیا، صورتحال اچھی نظر نہیں آرہی، گزشتہ سال قوم نے ایس او پیز پر عمل کیا، اس مرتبہ عمل نہیں ہو رہا اور حفاظتی تدابیر دیکھنے میں نہیں آرہیں جبکہ انتظامیہ بھی کارروائی نہیں کر رہی۔ اسد عمر نے کہا کہ کراچی میں کورونا کیسز کی

شرح 13 فیصد اور حیدرآباد میں 14 فیصد ہے، ہسپتال جانے والے مریضوں کی تعداد 600 سے زیادہ ہوگئی ہے، ان مریضوں کے پہنچنے کے بعد چند کی طبیعت اور خراب ہوتی ہے اور انہیں آکسیجن پر لگانا پڑتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمارا رواں ہفتہ انتہائی خطرناک ہے، پاکستان میں وبا کے آغاز سے اب تک اس ہفتے اموات کی تعداد سب سے زیادہ ہے، کئی شہر ایسے ہیں جہاں وینٹی لیٹرز کا استعمال 80 فیصد سے بھی زیادہ ہوگیا ہے، ملک میں جو آکسیجن بنائی جاتی ہے اس کی تعداد بھی لاتعداد نہیں ہے، اس لیے ہماری آکسیجن کی سپلائی چین خطرناک حد تک بڑھتی ہوئی نظر آرہی ہے۔وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ آج این سی او سی میں مزید کچھ فیصلے کیے جنہیں صوبوں سے شیئر کریں گے اور جمعہ کو ان فیصلوں کا اعلان کریں گے، جن میں مزید بندشیں بڑھانا پڑیں گی کیونکہ جس طرح اس وقت وبا کا پھیلاؤ ہے، اگر اس وبا کا زور فوری نہیں توڑا تو بڑے شہر بند کرنے کے علاوہ کوئی راستہ نہیں ہوگا۔انہوں نے مزید کہا کہ اس وقت صورتحال بہت سنگین ہے، انتہائی سنجیدگی کی ضرورت ہے اور قوم سے اپیل کرتاہوں کہ سنجیدگی دکھائیں، ہمارے پاس آخری موقع ہے، ابھی بڑے شہر بند نہیں کررہے، لیکن ہمارے پاس چند دنوں کی گنجائش ہے، اگر قوم سے زیادہ سنجیدگی اور تعاون نظر آیا، انتظامیہ نے کردار ادا کیا تو امید ہےکہ یہ اقدام نہ اٹھانا پڑے، ورنہ بڑے شہر بند کرنے کے سوا کوئی راستہ نہ ہوگا۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *