حکومت کا اہم فیصلہ

کراچی (ویب ڈیسک)وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہاہے کہ پہلی دفعہ پاکستان میں ٹیکس ڈیفالٹر کو قید میں ڈالا جائے گا،ہمارا زور نوکریوں کی تشکیل پر ہو گا،قیمتیں نیچے لانے کیلئے حکومت پیداوار بڑھا نا چاہتی ہے ،پی بی ایس خود مختار ہے اسد عمر اس ادارے کو پلاننگ ڈویژن کے ماتحت لے کر گئے۔

مجھے ایک ماہ ہوا ہے میں نے ان سے پوچھا کوئی جعل سازی تو نہیں کی گئی مجھے بتایا گیا کہ ایسی کوئی بات نہیں ہے تمام ریکارڈ کو سامنے رکھتے ہوئے گروتھ ریٹ بتایا گیا ہے۔ہم نے پاور سیکٹر کو بھی ٹھیک کرنا ہے ، ایم ایل ون اتنا بڑا ایشو نہیں چین نے ہمارے لیے اتنا برا انفراسٹرکچر قائم کیا ہے، بجلی کے پراجیکٹ لگاتے ہوئے سوچنا چاہیے تھا اتنی بجلی استعمال کہاں ہوگی ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایک انٹرویو میں کیا۔ وزیر خزانہ شوکت ترین کا مزید کہنا تھا کہ اگر ستر فیصد ٹیکس ودہولڈنگ ہے اور ٹیلی نار وغیرہ اوربینکس اکٹھے کر کے دے رہے ہیں تو ایف بی آر اگر تیس فیصد میں معالات کرتا ہے تو ان کا برتاؤ بدلنے کے لیے کیا کریں گے اس کے جواب میں کہا کہ یونیورسل سیلف اسسیسمنٹ ہوگی اس کے بعد جو آڈٹ ہوگا وہ تھرڈ پارٹی کرے گی ،ایف بی آر آڈٹ نہیں کرے گا ہم آئی کیپ سے لوگ لیں گے ۔ پہلی دفعہ پاکستان میں ٹیکس ڈیفالٹر کو قید میں ڈالا جائے گا۔ وزیر خزانہ نے غلط اعداد و شمار سے موازنہ کو یکسر مسترد کیا ۔انہوں نے کہا کہ ہمارا زور اب نوکریوں کی تشکیل پر ہو گا، حکومت پیداوار کو بڑھا نا چاہتی ہے تاکہ قیمتیں نیچے آجا ئیں جس کا آ غاز ہو گیا ہے ۔ شوکت ترین نے امید ظاہر کر تے ہوئے کہا کہ بجٹ کے درمیان وہ ایسے پروگرام لے کر آئیں گے جس سے یہ شرح 4فیصد سے بڑھ کر 5پر چلی جا ئے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *