خود اعتراف کر لیا ،

لاس اینجلس (ویب ڈیسک)متعدد فلموں، ویب سیریز اور ڈراموں میں خاتون کا کردار ادا کرنے والی کینیڈین نژاد امریکی اداکارہ 33 سالہ ایلن پیج نے انکشاف کیا ہے کہ دراصل وہ خاتون نہیں بلکہ مخنث ہیں۔

ایلن پیج نے 1997 میں کم عمری میں ہی کینیڈین ٹی وی سی بی سی پر اداکاری کا آغاز کردیاتھا اور ابتدائی دور سے اب تک وہ ایک خاتون کے طور پر کام کرتی دکھائی دیں۔ایلن پیج کو اس وقت شہرت حاصل ہوئی جب انہوں نے 2005 میں امریکی تھرلر فلم ʼ’ہارڈ کینڈی ‘میں ایک ایسی 14 سالہ لڑکی کا کردار ادا کیا، جس پر ایک مرد وحشیانہ سلوک کرتا ہے۔بعد ازاں ایلن پیج نے 2007 کی کامیڈی رومانٹک فلم ’جونو‘ میں بھی ایک ایسی جواں سالہ لڑکی کا کردار ادا کیا تھا جو نہ چاہتے ہوئے بھی ماں بن جاتی ہیں۔اسی فلم میں انہوں نے مرکزی کردار جونو ادا کیا تھا اور شاندار اداکاری دکھانے پر انہیں آسکر کے لیے بھی نامزد کیا گیا جب کہ اسی فلم کے باعث انہیں دیگر بڑے فلمی ایوارڈز کے لیے بھی نامزد کیا گیا۔بعد ازاں ایلن پیج ʼانسیپشن، سپر، ایکس مین: ڈیزآف فیوچر پاسٹ اور ڈی کیورڈ‘ سمیت دیگر فلموں میں بھی دکھائی دیں۔ایلن پیج نے مجموعی طور پر 4 درجن کے قریب فلموں، ویب سیریز اور ڈراموں میں کام کیا، جب کہ انہوں نے ہدایت کاری میں بھی قسمت آزمائی۔ انہیں ایک طاقتور خاتون کے طور پر پہچانا جاتا رہا ہے تاہم یکم دسمبر کو انہوں نے اپنی سوشل میڈیا پوسٹس میں انکشاف کیا کہ وہ ʼخاتون نہیں بلکہ ʼمخنث ہیں۔ایلن پیج نے پوسٹ میں اپنا نام بھی تبدیل کرنے کا اعلان کیا اور انہوں نے اپنا نام ایلن کے بجائے ایلئٹ لکھا۔انہوں اپنے ساتھ پیش آنے والی مشکلات کا ذکر بھی کیا اور کہا کہ انہیں خوشی ہے کہ بالآخر انہوں نے سب کے سامنے اپنی جینڈر کا اعتراف کیا۔انہوں نے اس عزم کا اعادہ بھی کیا کہ وہ اب بھی ٹرانس جینڈر افراد کے حقوق کے لیے کام کرتی رہیں گی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.