سورج گرہن : پاکستان کے کس شہر میں حیران کن نظارہ دیکھنے کو ملا؟ جانیے

لاہور (ویب ڈیسک) پاکستان میں سورج گرہن اختتام کی جانب گامزن ہے، سکھر میں سورج گرہن سے رِنگ آف فائر یا روشنی کے چھلے کا دلکش نظارہ دیکھنے کو ملا، جس کی وجہ سے سکھر میں دن میں مغرب کے وقت جیسا منظر نظر آیا۔کراچی میں سورج گرہن کا نکتۂ عروج گزر گیا،

جہاں جزوی سورج گرہن ہوا جس سے سارے شہر میں سایہ چھایا رہا، تاہم رِنگ آف فائر نہیں دکھائی دیا۔پاکستان میں آج صبح 9 بج کر 26 منٹ پر سورج کو گرہن لگنا شروع ہوا تھا جس میں چاند زمین تک پہنچنے والی سورج کی شعاعوں کا راستہ روکنے لگا، 11 بجے کے بعد سورج گرہن اپنے عروج پر پہنچا۔ملک میں سورج گرہن اس وقت اپنے اختتام کی جانب گامزن ہے جو دوپہر 2 بج کر 34 منٹ پر ختم ہو جائے گا۔محکمۂ موسمیات کے مطابق سورج گرہن پاکستان سمیت افریقہ اور ایشیاء کے کئی ممالک میں دیکھا جا رہا ہے، ملک کے کچھ شہروں میں مکمل اور کہیں جزوی روشنی کا ہالہ بنا۔ملک میں کراچی، اسلام آباد، لاہور، کوئٹہ، سکھر، لاڑکانہ اور حیدرآباد سمیت مختلف شہروں میں سورج گرہن دیکھا جا رہا ہے۔سورج گرہن کی وجہ سے دن میں شام کا نظارہ دیکھنے کو ملا، جبکہ درجۂ حرارت میں کمی بھی دیکھی گئی۔پاکستان میں سورج گرہن کا ایسا منظر سال 2095ء میں دیکھا جا سکے گا۔محکمۂ موسمیات نے اسے 1999ء والے گرہن کے بعد سب سے بڑا سورج گرہن قرار دیا ہے۔کراچی میں سورج گرہن کا آغاز صبح 9 بجکر 26 منٹ پر ہوا، جبکہ شہرِ قائد میں سورج گرہن کا اختتام 12 بج کر 46 منٹ پر ہو گا۔کراچی میں گرہن کے عروج کے وقت سورج کا 92 فیصد حصہ چاند کے پیچھے چھپ گیا۔لاہور میں سورج گرہن کا آغاز صبح 9 بج کر 48 منٹ پر ہوا، 11 بج کر 26 منٹ پر یہ عروج پر پہنچا اور سورج کا 91 فیصد حصہ چاند کے پیچھے چھپ گیا، سورج گرہن کا اختتام دوپہر 1 بج کر 10 منٹ پر ہوگا۔اسلام آباد میں سورج گرہن کا عروج دن 11 بج کر 25 منٹ پر ہوا۔ماہرینِ فلکیات و طب نے سورج گرہن کے دوران براہِ راست سورج کا مشاہدہ نہ کرنے کی ہدایت کی ہے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ سورج گرہن کے وقت براہِ راست سورج دیکھنے کی کوشش نہ کریں، بینائی کو نقصان پہنچ سکتا ہے یا بینائی جانے کا خطرہ بھی ہو سکتا ہے۔ماہرین نے سورج گرہن کے دوران سورج کی طرف بغیر کسی فلٹر والے چشمے کے دیکھنے سے منع کیا ہے اور کہا ہے کہ ذرا سی بے احتیاطی سورج گرہن دیکھنے والے کو عمر بھر کے لیے بصارت سے محروم کر سکتی ہے۔ماہرِ امراض چشم کے مطابق گرہن کے دوران سورج کی طرف دیکھنے والوں کی آنکھوں کے پردے کا مرکزی حصہ متاثر ہو سکتا ہے۔علمائے کرام کہتے ہیں کہ سورج گرہن کے دوران توبہ، استغفار کی کثرت کے ساتھ نمازِ کسوف ادا کریں۔ملک بھر میں جہاں جہاں سورج کو گرہن لگا وہاں نمازِ کسوف ادا کی گئی جبکہ مختلف شہروں میں اس وقت بھی نمازِ کسوف ادا کی جا رہی ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.