سوزین خان کا حیران کن بیان

ممبئی (ویب ڈیسک ) ممبئی کے ایک نائٹ کلب میں کورونا قواعد و ضوابط کی خلاف ورزی کرنے اور دیر رات تک پارٹی کرنے کے الزامات کے تحت بھارتی فلم انڈسٹری کی معروف شخصیات سمیت بھارتی سابق کرکٹر سوریش رائنا کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیاہے تاہم چھاپہ مار کارروائی اور گرفتاری

کے حوالے سے ریتک روشن کی سابق اہلیہ کا بیان سامنے آ گیاہے ۔تفصیلات کے مطابق سوزین خان نے گزشتہ رات پیش آنے والے واقعہ پر وضاحتی بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ ” میری عاجزانہ وضاحت ہے کہ گزشتہ رات میں اپنے ایک قریبی دوست کی سالگرہ کی دعوت میں شریک تھی ، ہم میں سے کچھ نے ” ڈریگن فلائی کلب “ میں جانے کا فیصلہ کیا لیکن تقریبا رات اڑھائی بجے وہاں قانون نافذ کرنے والے ادارے کے اہلکار آئے ، جب تک کلب کی انتظامیہ پولیس کے ساتھ معاملات کو دیکھ رہی تھی تو تمام مہمانوں کو کلب میں تین گھنٹے تک روک کر رکھا گیا تاہم بعدازاں صبح چھ بجے ہمیں جانے کی اجازت دیدی گئی ۔ اس لیے میڈیا پر گرفتاری کی چلنے والی رپورٹس سراسر غلط اور غیر ذمہ دارانہ ہیں ۔“سوزین کا کہناتھا کہ ” میں یہ سمجھنے سے قاصر ہوں کہ ہمیں انتظار کیوں کروایا گیا اور پولیس کا کلب انتظامیہ کے ساتھ کیا معاملہ تھا ؟، میں اپنے اس بیان سے حقائق کی درستگی کر رہی ہوں ، میری نظر میں ممبئی پولیس قابل احترام ہے وہ ہمیں محفوظ کرنے کیلئے اپنی تمام تر کوششیں کر رہے ہیں ، ان کی کڑی نگرانی کے بغیر ممبئی کے لوگ خود کو محفوظ محسوس نہیں کر سکیں گے ۔یاد رہے کہ چھاپے کے دوران پب میں معروف گلوکار گرورندھاوا اور سابق بھارتی کرکٹر سوریش رائنا بھی موجود تھے اور ان کے خلاف بھی مقدمہ درج کیا گیاہے ۔

Sharing is caring!

Comments are closed.