سپریم کورٹ میں پیش آیا حیران کن واقعہ

اسلام آباد(ویب ڈیسک) سپریم کورٹ نے ڈیم فنڈ میں عطیہ 12 کنال زمین کے کاغذات مالک کو واپس کر دیے۔چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے ڈیم فنڈ میں 12 کنال اراضی عطیہ کرنے سے متعلق معاملے کی سماعت کی۔ سپریم کورٹ نے ڈیم فنڈ میں عطیہ 12 کنال زمین کے کاغذات مالک

کو واپس کر دیے۔ عدالت نے رجسٹرار سپریم کورٹ کو ملکیت کی دستاویز شیخ آفتاب الہی کے حوالے کرنے کی ہدایت کی۔شیخ شاہد آفتاب الہی نے کہا کہ قبضہ گروہوں سے تنگ آکر زمین ڈیم فنڈ میں عطیہ کی، ان لوگوں نے ظلم کیا، پرچہ بھی ہمارے خلاف درج کرایا گیا۔بیٹے فیضان نے کہا کہ ہمارے والد نے نفسیاتی مرض کی وجہ سے زمین فنڈ میں عطیہ کی۔اس پر چیف جسٹس پاکستان گلزار احمد نے کہا کہ یہ عدالت میں کیا تماشہ لگایا ہوا ہے، عدالت کا وقت ضائع کر رہے ہیں، چار پیسوں کے لیے اپنے والد کو نفسیاتی کہہ رہے ہو، ڈیم فنڈ میں زمین عطیہ کرنی ہے تو خوشی سے دیں، لے جائیں اپنی زمین کی دستاویزات۔

Comments are closed.