سہیل اصغر کی فون پر آخری بات چیت

کراچی (ویب ڈیسک)13 نومبر کو انتقال کرجانے والے پاکستان کے لیجنڈری اداکار سہیل اصغر کا آخری آڈیو پیغام سامنے آگیا۔برطانوی نشریاتی ادارے کی جانب سے لیجنڈری اداکار سہیل اصغر کا آخری آڈیو پیغام جاری کیا گیا ہے جوکہ اْنہوں نے اپنے بیمار دوست نور الحسن کو بھیجا تھا جبکہ یہ پیغام پنجابی زبان میں تھا۔

آڈیو پیغام میں سہیل اصغر کو اپنے بیمار دوست سے کہتے ہوئے سْنا جاسکتا ہے کہ ʼبیمار کی دْعا، بیمار کو لگتی ہے۔سہیل اصغر نے کہا کہ ʼمیرا رب بیٹھے بِٹھائے اپنی آزمائش بھیج دیتا ہے لیکن شکر الحمداللہ کہ میرے رب نے کبھی میرا ہاتھ نہیں چھوڑا، ہر آزمائش میں میرا ہاتھ تھام کر رکھا۔اداکار نے کہا کہ ʼاللہ پاک نے ہمیشہ مجھے سرخرو کیا اور انشاءاللہ! آگے بھی کرے گا، میرا رب میرے ساتھ ہے، میری ہر ایک ایک سانس کے ساتھ ہے۔اْنہوں نے کہا کہ ʼنہ جانے ہم ایسا کیا کر بیٹھے کہ اللہ تعالیٰ کو اتنے پیارے ہوگئے، کہتے ہیں کہ جو بندہ اللہ کو عزیز ہوتا ہے، آزمائش بھی اْسی کو دی جاتی ہے۔سہیل اصغر نے کہا کہ ʼمیرا رب بہتر جانتا ہے کہ میں نے کبھی کسی کا بْرا نہیں چاہا، ہر ایک کے لیے اچھا سوچا اور اچھا چاہا۔آخر میں اداکار سہیل اصغر نے اپنے دوست کی جلد صحتیابی اور خوشیوں سے بھرپور زندگی کے لیے دْعا بھی کی۔واضح رہے کہ سہیل اصغر ڈیڑھ سال سے بیمار تھے اور تین روز قبل 13 نومبر کو دْنیا سے کوچ کرگئے۔