سینئر پاکستانی اداکارہ سکینہ سموں نے دل کی بھڑاس نکال ڈالی

لاہور (ویب ڈیسک) پاکستان شوبز انڈسٹری کی سینئر اداکارہ سکینہ سموں نے گلوکار علی ظفر اور اداکارہ ریشم کو صدارتی ایوارڈ برائے حُسنِ کارکردگی ملنے پر برہمی کا اظہار کیا ہے۔سکینہ سموں نے ایک نجی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حال ہی میں دیے جانے والے صدارتی ایوارڈز پر اظہارِ خیال کیا۔

سینئر اداکارہ نے کہا کہ ’مجھے صدارتی اعزاز حاصل کرنے کے مقام تک پہنچنے کے لیے 40 سال لگے جبکہ مجھے یہ دیکھ کر بہت افسوس ہوا کہ حکومت پاکستان نے علی ظفر اور ریشم جیسے فنکاروں کو اتنے بڑے صدارتی اعزاز سے نوازا۔‘سکینہ سموں نے کہا کہ ’میری نظر میں علی ظفر اور ریشم صدارتی اعزاز حاصل کرنے کے حقدار نہیں۔‘اُنہوں نے مزید کہا کہ ’میرے خیال میں صدارتی تمغہ برائے حُسنِ کارکردگی کا انتخاب آج کل اس قدر آسان ہوگیا ہے کہ اس کے نتیجے میں کئی ایسی شخصیات کو نظر انداز کیا جارہا ہے جو اپنی تمام زندگی شوبز میں وقف کرچکی ہیں۔‘واضح رہے کہ گزشتہ دنوں یوم پاکستان 23 مارچ کے روز حکومت پاکستان کی جانب سے مختلف شعبوں میں نمایاں کارکردگی کی حامل شخصیات کو سول اور صدارتی ایوارڈز سے نوازا گیا تھا۔ملک کی 22 شخصیات کو تمغۂ شجاعت اور 33 کو ستارہ شجاعت سے نوازا گیا۔تقریب میں مختلف شعبہ ہائے زندگی کے دوران نمایاں خدمات پر 8 شخصیات کو ستارہ امتیاز اور 22 کو صدارتی اعزاز برائے حُسنِ کارکردگی سے نوازا گیا جن میں گلوکار علی ظفر اور اداکارہ ریشم بھی شامل ہیں۔فن کے شعبے میں نمایاں کارکردگی پر سکینہ سموں سمیت بشریٰ انصاری، سلطانہ صدیقی اور فاروق قیصر کو نشان امتیاز دیا گیا، اداکارہ زیبا شہناز اور عابدہ پروین کو تمغۂ امتیاز سے نوازا گیا۔

Comments are closed.