سینئر پاکستانی صحافی نے دلائل کے ساتھ پیشگوئی کردی

لاہور (ویب ڈیسک) نامور صحافی چوہدری محمد اکرم اپنے ایک تبصرے میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔پنجاب کے بلدیاتی انتخابات میں تحریک انصاف کو جیتنے والے امیدوار نہیں ملیں گے۔ ایک ایسے وقت میں جب مسلم لیگ نون کی پوری توجہ بلدیاتی انتخابات پر ہے، وہ ہر ضلع میں حتیٰ کہ کونسلر کی سطح پر بھی توجہ

دیتے ہوئے بہتر امیدواروں پر کام کر رہے ہیں۔ پاکستان تحریک انصاف کے وزراء غیر ضروری بیان بازی میں الجھے ہوئے ہیں۔ اچانک حکومت جانے کا خوف ان کے اعصاب پر کیوں سوار ہوا ہے۔ حکمراں جماعت کے اراکین قومی و صوبائی اسمبلی کیوں آئندہ انتخابات کے لیے راستے تلاش کر رہے ہیں، کیوں تین سال سے زائد عرصہ حکومت میں رہنے کے باوجود بھی وہ آئندہ عام انتخابات کے لیے سیاسی وفاداریاں بدلنے کی کوششوں میں مصروف ہیں۔ یہ ساری چیزیں حکومت کی ناکامی کا پتہ دیتی ہیں۔ وزیراعظم عمران خان کے جانے کی خبروں کے پیچھے چھپنے والے منتخب اراکین دراصل اپنی ناکامی کو چھپانے کے لیے کسی سہارے کی تلاش میں ہیں اور یہی سوچ کسی بھی حکومت کی ناکامی میں سب سے اہم کردار ادا کرتی ہے۔ وزراء غیر ضروری طور پر میاں نواز شریف کی وطن واپسی کے معاملے پر خبروں میں ہیں۔ بظاہر ایسا کچھ ہوتا نظر نہیں آ رہا، بظاہر نون لیگ میں ایسی سوچ نظر نہیں آتی۔ وہ مشکل حالات کے باوجود بہتر اور منظم انداز میں بلدیاتی انتخابات کی طرف بڑھ رہے ہیں۔ جبکہ پی ٹی آئی حکومت میں ہونے کے باوجود غیر منظم نظر آتی ہے۔ پی ٹی آئی کے راستے میں پاکستان تحریک انصاف کے سوا کوئی سیاسی جماعت رکاوٹ نہیں ہے۔ اس جماعت کی بدانتظامی اور غلط فیصلے ہی اس کے راستے کی سب سے بڑی رکاوٹ ہیں۔ سوا تین سال سے زائد عرصہ حکومت میں گذارنے کے باوجود عوام کے مسائل پر سنجیدگی کا مظاہرہ نہیں کیا گیا۔ یہی وجہ ہے کہ آج کوئی بھی پی ٹی آئی کے ساتھ نہیں ہے۔ حتیٰ کہ اتحادی بھی با امر مجبوری ساتھ نبھا رہے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نوجوانوں کو امید دلاتے ہیں لیکن شاید ابھی تک وہ یہ نہیں سمجھ سکے کہ مردہ گھوڑوں کے ساتھ کامیابی حاصل نہیں کی جا سکتی۔ حکمران جماعت میں ایسے کئی گھوڑے موجود ہیں جو کسی بھی حالت میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کر سکتے۔

Comments are closed.