سی سی پی او لاہور عمر شیخ کا لاہور کے اہم پولیس افسر سے جھگڑا ۔۔۔

لاہور(ویب ڈیسک)پولیس سانحی موٹروے اوے پی ڈی ایم کے جلسوں کی وجہ سے بوکھلاہٹ کا شکار ہے ،ی سی پی او عمر شیخ اور ایس پی سی آئی اے افتخار عاصم کے دوران گزشتہ شب دو بجے شدید جھگڑا ہوا ہے جس کے بعد عاصم افتخار وہاں سے چلے گئے تاہم معاملہ ابھی تک نارمل ہوتا دکھائی نہیں

دے رہاہے ۔ جھگڑے کا یہ واقعہ سی سی پی او آفس میں پیش آیا ۔نجی ٹی وی چینل کے مطابق دیر رات کو کی جانے والی میٹنگز کو لے کر پہلے ہی پولیس کے اندر چہ مگوئیاں چل رہی تھیں اور گزشتہ رات بھی سی سی پی او لاہور نے ڈیڑھ بجے میٹنگ بلائی ، اس میٹنگ میں ایس پی سی آئی اے تاخیر سے پہنچے تو سی سی پی او لاہور نے انہیں جھاڑنا شروع کر دیا اور تاخیر سے آنے کی وجہ پوچھی ، ایس پی سی آئی اے نے تاخیر کی وجہ طبیعت کی ناسازی بتائی ، سی سی پی او نے ایسے الفاظ استعمال کیے کہ عاصم افتخار بھی شدید غصے میں آگئے اور تلخ کلامی ہوئی ۔سی سی پی او لاہور عمر شیخ نے اس کے بعد موٹر وے کیس کے مرکزی ملزم عابد ملہی کی گرفتاری پر بھی ان کو اعتماد میں نہ لینے پر ایس پی سی اآئی اے کی سرزنش کی اور انہیں فوری طور پر حراست میں لینے کے احکامات جاری کیے ۔ حراست میں لینے کے احکامات پر عاصم افتخار نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ میں کوئی کانسٹیبل یا سب انسپکٹر نہیں ہوں جسے آپ گرفتار کر لیں گے مجھے کوئی ہاتھ لگا کر دکھائے ۔یہ کہہ کر عاصم افتخار کمرے سے باہر چلے گئے ۔سی سی پی او لاہور نے ایس پی سی آئی اے سے گارڈ اور گاڑی واپس لینے کے احکامات جاری کیے لیکن عاصم افتخار اپنا گارڈ اور گاڑی لے کر وہاں سے چلے گئے ،سی سی پی او لاہور عمر شیخ نے اس کے بعد افتخار عاصم کے خلاف مقدمہ درج کرنے کیلئے استغاثہ لکھ دیاہے تاہم سینئر افسران کے بیچ میں پڑنے اور معاملے کو سلجھانے کی کوشش کے پیش نظر اس استغاثہ پر ابھی تک عملدرآمد نہیں ہواہے ۔عاصم افتخار اپنا چینل استعمال کر رہے ہیں کہ سی سی پی او کا اس طرح کا یہ رویہ برداشت نہیں کیا جائے گا ، ن لیگ کی کل لاہور میں ریلی بھی ہے اور اس پر افسران پہلے ہی کافی ڈسٹرب دکھائی دے رہے ہیں اور جھگڑا نارمل ہوتا دکھائی نہیں دے رہاہے ۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *