شہزاد اکبر اور فروغ نسیم سے استعفیٰ دینے کا کہہ دیا گیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان بار کونسل نے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف حکومتی ریفرنس کو غیر قانونی ، غیر آئینی اور بدنیتی پر مبنی قرار دینے کے فیصلے پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے صدر عارف علوی ، وزیر قانون فروغ نسیم اور وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے

احتساب شہزاد اکبر مرزا سے فوری طور پر عہدوں سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر دیا ہے ۔ پاکستان بار کونسل کے وائس چیئرمین عابد ساقی اور ایگزیکٹو کمیٹی کے چیئرمین اکبر نذیر تارڑ نے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ حکومت اور اس کے اہلکاروں نے اپنے سیاسی عزائم کی تکمیل اور عدلیہ کو بدنام کرنے کے لئے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف ریفرنس داخل کیا ۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ ریفرنس وزیر قانون فروغ نسیم اور وزیر اعظم کے معاون خصوصی بیرسٹر شہزاد اکبر مرزا غیر آئینی ، غیر قانونی اور بدنیتی پر مبنی ریفرنس کے ماسٹر مائنڈ ہیں جبکہ صدر عارف علوی نے اپنا ذہن استعمال نہیں کیا۔ مشترکہ بیان میں کہا گیا ہےکہ پاکستان بار کونسل قاضی فائز عیسیٰ کیس میں نظر ثانی کی اپنی درخواست میں مزید قانونی نکات پر متفرق درخواست بھی دائر کرے گی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.