صحافی اسد طور نے حیران کن خبر دے دی

اسلام آباد (ویب ڈیسک )سینئر صحافی اسد طور نے دعویٰ کیاہے کہ افغانستان کے سفیر نجیب اللہ علی خیل کی نوجوان بیٹی” سلسلہ علی خیل“ کو اسلام آبادسے جبری طور پر کہیں لے جاتا گیا اور کچھ گھنٹوں کے بعد ملزمان اسکو بلیو ایریا میں پھینک کر فرارہو گئے ۔تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی اسدطور نے

اپنے یوٹیوب چینل پر جاری وی لاگ میں دعویٰ کیا کہ گزشتہ روز اسلام آباد کے ایف 7 مرکز کی جناح سپر مارکیٹ سے افغانستان کے سفیر نجیب اللہ خیل کی 26 سالہ بیٹی سلسلہ علی خیل کو دن ڈیڑھ بجے اغواءکیا گیا اور شام کو 7 بجے بلیو ایریا تہذیب بیکری کے پاس پھینک دیا گیا۔صحافی اسد علی طور کے مطابق افغان سفیر کی بیٹی کو علاج کے لیے میں پمز ہسپتال میں داخل کروایا گیا جہاں ان کا علاج جاری ہے ،اس معاملے کی تحقیقات کوہسار پولیس کر رہی جہاں مقدمے کے اندراج کے لئے درخواست دی جا چکی ہے، کوہسار پولیس کے سب انسپکٹر رضا کو کیس کا انوسٹی گیشن آفیسر تعینات کیا گیا ہے جبکہ دیگر ادارے بھی اس کی تحقیقات کر رہے ہیں۔صحافی اسد علی طور نے بتایا کہ لڑکی کو زدوکوب کرنے رپورٹ ان کے پاس موجود ہے علاوہ ازیں انہوں نے دیگر معلومات بھی اکٹھی کرنے کی کوشش کی ہے۔ افغان سفیر کی بیٹی دن ڈیڑھ بجے سے شام 7 بجے تک لاپتہ رہیں یعنی ساڑھے پانچ گھنٹے وہ ملزمان کے پاس رہیں اور اس دوران ان کو زدوکوب کیا گیا پھر انہیں بلیو ایریا میں پھینک دیا گیا۔صحافی اسد علی طور نے بتایا کہ یہ خبر پاکستان کے کسی چینل میں نہیں چلائی گئی اس کی وجہ خطے کے کشیدہ حالات ہیں اور اس خبر کے بڑے گمبھیر نتائج ہو سکتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *