طاقتور ترین شخصیت مصباح الحق سے بدظن ۔۔

کراچی(ویب ڈیسک) پی سی بی کے طاقتور ترین افراد میں سے ایک اب مصباح الحق کی جگہ ہیڈ کوچ کی ذمہ داری کسی غیر ملکی کو دینے کی خواہش رکھتے ہیں۔ مصباح کی تقرری تین سال کےلئے ہوئی ہے۔ لیکن پہلا سال گذرنے کے بعد انہیں بطور چیف سلیکٹر فارغ کردیا گیا۔ وہ شخص محمد وسیم

کوسلیکشن ہیڈ بنوانے میں آگے تھے۔ انہوں نے ہی مکی آرتھر کو لانے اور ہٹوانے کے بعد مصباح کی تقرری میں کردار ادا کیا تھا۔ ذرائع کا دعویٰ ہے کہ مصباح الحق کی کوچنگ سے سبکدوشی کے لئے طریقہ کار طے ہے اسی کے ذریعے معاملات آگے بڑھیں گے، انہیں جنوبی افریقا کی سیریز سے پہلے فارغ نہیں کیا جائے گا البتہ سیریز ان کے مستقبل کا فیصلہ ضرور کرے گی۔ انہیں بھی اپنے دفاع میں بولنے کا موقع دیا جائے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ کرکٹ کمیٹی کا اجلاس جنوبی افریقا کےخلاف کراچی ٹیسٹ سے قبل ہوسکتا ہے۔ کمیٹی میں چیئرمین سلیم یوسف، وسیم اکرم ،وسیم خان ،عروج ممتاز، علی نقوی اور عمر گل شامل ہیں۔ کرکٹ کمیٹی کے ہیڈ کوچ کو تبدیل کرنے کی سفارش پر نئے ہیڈ کوچ کےلئے اشتہار دینا ہوگا۔ وطن واپسی پر مصباح الحق کے پاس استعفے کا آپشن ہوگا لیکن اس کے امکانات کم ہیں۔ذمے دار ذرائع کا کہنا ہے کرکٹ کمیٹی کی سفارشات پر ہیڈ کوچ کی تبدیلی کا فیصلہ چیئرمین احسان مانی نے کرنا ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ اسی شخصیت نے سلیم یوسف کو چیئرمین کرکٹ کمیٹی بنانے میں کردار ادا کیا تھا۔ مصباح الحق کو اکتوبر2019میں کرکٹ کمیٹی کی سفارش میں ہیڈ کوچ اور چیف سلیکٹر بنایا گیا تھا۔ کرکٹ کمیٹی میں رہ کر مصباح نے مکی آرتھر کو بھی کوچ کے عہدے سے ہٹوانے کی تجویز دی تھی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ پی سی بی کے بڑے اور اہم حکومتی شخصیت کے قریب رہنے والے ایک طاقتور کھلاڑی اس بات پر متفق ہیں کہ انہوں نے غلطیوں سے سبق نہیں سیکھا ہے اس لئے اب انہیں گھر بھیجا جائے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *