عمران حکومت کے 35 ماہ ۔۔۔

اسلام آباد(ویب ڈیسک)وفاقی حکومت کے قرضوں میں مسلسل اضافے کا رحجان برقرار ہے،وفاقی حکومت کے قرضے ریکارڈ انتالیس ہزار آٹھ سو انہتر ارب روپے سے تجاوز کر گئے،موجودہ حکومت کے 35ماہ میں قرضوں میں پندرہ ہزار ایک سو سینتیس ارب روپے کا اضافہ رکارڈ کیا گیا۔ملکی قرضے26827،غیر ملکی 13ہزار ارب روپے ہوگئے ،

تحریک انصاف حکومت کا ملکی و غیر ملکی قرضوں پر انحصار بدستور برقرار ہے،وفاقی حکومت کے قرضوں کے ماضی کے سارے رکارڈ ٹوٹ گئے ہیں،سٹیٹ بینک نے وفاقی حکومت کے قرضوں کی تازہ تفصیلات جاری کردیں۔ بینک کی دستاویز کے مطابق موجودہ حکومت کے35 ماہ( اگست دو ہزار اٹھارہ سے جولائی دو ہزار اکیس) کے دوران قرضوں میں پندرہ ہزار ایک سو سینتیس ارب روپے کا اضافہ ہوا اور وفاقی حکومت کے مجموعی قرضے انتالیس ہزار آٹھ سو انہتر ارب روپے سے تجاوز کر گئے۔سٹیٹ بینک کے مطابق جولائی دو ہزار اکیس تک وفاقی حکومت کے ملکی قرضے 26 ہزار 827 ارب روپے اور غیر ملکی قرضے 13ہزار ارب روپے ہوگئے۔موجودہ دور میں وفاقی حکومت کے اندرونی قرضوں میں 10 ہزار 36 ارب روپے اور بیرونی قرضے میں 5 ہزار 101 ارب روپے کا اضافہ ہوا صرف جولائی دو ہزار اکیس کے ایک ماہ میں وفاقی حکومت کا قرض ایک ہزار ایک سو بہتر ارب روپے بڑھا۔اگست 2018 میں وفاقی حکومت کے قرضے 24 ہزار 732 ارب روپے تھے جس میں اندرونی قرضے 16 ہزار 790 ارب روپے تھے اوربیرونی قرضے 7 ہزار 942 ارب روپے تھے۔

Comments are closed.