عمران خان نے پھر پاکستانیوں کو ٹرک کی بتی کے پیچھے لگا دیا

مری(ویب ڈیسک) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ سیاحت پاکستان کا مستقبل ہے‘صحت اور تعلیم عوام کی سب سے بڑی ضرورت ہوتی ہے‘ مری کی طرزپر دیگر علاقوں میں سیاحتی مقامات بنائیں گے۔سیاحت کے فروغ سے برآمدات اور ترسیلات زر سے زیادہ سرمایہ حاصل کرسکتے ہیں‘ سیاحت کی آمدن سے ہم اپنے قرضے

اتار سکتے ہیں‘ مدینہ کی ریاست کے اصول اپنانے سے غیر مسلم بھی آگے نکل گئے۔وہ جمعہ کو یہاں مری میں کوہسار یونیورسٹی کے افتتاح کے موقع پر خطاب کررہے تھے۔وزیر اعظم نے کہاکہ ماضی میں حکمرانوں نے پنجاب ہائوس کی تزئین ومرمت پر 83 ارب روپے صرف کئے،وہ ایک خاندان کے لئے تھا،اب یہاں عوام کے لئے کام ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ اتنی بڑی آبادی پر مشتمل علاقہ ہے لیکن یہاں کوئی ہسپتال نہیں ہے،صرف نتھیا گلی میں ایک ہسپتال ہے۔جو یہاں کی آبادی اور سیاحوں کی ضرورت پوری نہیں کر سکتا۔اب یہاں 380 کنال پر جنرل ہسپتال بنے گا‘ہماری سیاحت صرف مری تک محدود ہوگئی ہے،مری میں آبادی بہت بڑھ چکی ہے،مری اور نتھیا گلی کے علاوہ کوئی اور سیاحتی مقام نہیں بنایا گیا،یہاں جگہ جگہ ایسے سیاحتی مقام بنائے جاسکتے ہیں۔وزیر اعظم نے کہا کہ ہم ہم معاشرے کے پسے ہوئے طبقہ کو اوپر اٹھائیں گے،انسانی ترقی پر وسائل صرف کریں گے،پسماندہ علاقوں پر توجہ دیں گے،اس سے نوجوانوں کو روزگار کے لئے کہیں باہر نہیں جانا پڑے گا۔پنجاب ہائوس مری میں کوہساریونیورسٹی کی افتتاحی تقریب اوروزیراعظم عمران خان کی آمد کے موقع پر میڈیاکودعوت نہیں دی گئی جبکہ رکن قومی اسمبلی صداقت علی عباسی کی جانب سے ایک آڈیو میسج کے ذریعے کورونااورسیکورٹی کلیئرنس کوجوازپیش کیاگیاجسے مری کے پرنٹ اورالیکٹرانک میڈیا جانب سے مستردکردیاگیاہے۔ایک طرف سینکڑوں لوگوں کوپنجاب ہائوس بلایاگیا تو دوسری جانب میڈیا کوکوروناکاجوازبناکرکوریج سے روکاگیا، مری الیکٹرانک میڈیااورکوہساریونین آف جرنلسٹس کے پلیٹ فارم سے اس اقدام کی بھرپور مذمت کی گئی ہے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *