عمران خان کو قومی اسمبلی سے اعتماد کا ووٹ ملا یا نہیں ؟ ک

اسلام آباد (ویب ڈیسک) قومی اسمبلی میں آج وزیراعظم عمران خان نے 178 اراکین کی حمایت حاصل کر کے پارلیمان سے اعتماد کا ووٹ حاصل کر لیا ہے۔ اس وقت ایوان کی معمول کی کارروائی جاری ہے۔ اراکین اپنی تقاریر سے قبل وزیر اعظم کو اعتماد کا ووٹ حاصل کرنے پر مبارکباد دے رہے ہیں۔

اس موقعے پر وزیر اعظم عمران خان، پنجاب، بلوچستان اور صوبہ خیبر پختونخوا کے وزرائے اعلیٰ اور دیگر اراکین کے ساتھ اسمبلی ہال میں موجود تھے۔اجلاس کے آغاز میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اعتماد کے ووٹ کی کارروائی سے متعلق قرارداد پیش کی تھی۔وزیر اعظم عمران خان نے اعتماد کا ووٹ حاصل کرنے کے بعد اراکین اسمبلی اور اتحادیوں کا شکریہ ادا کیا۔ انھوں نے اپنے خطاب میں کہا کہ آپ سب کو دل سے تکلیف تھی جس طرح ہم سینیٹ میں حفیظ شیخ کی نشست ہارے ہیں۔ ان کے مطابق یہ سب دیکھ کر انھیں اچھا لگا۔عمران خان کے مطابق اس وقت یہ ایک آزمائش ہے جس کا مقصد دیکھنا ہے کہ آپ اس سے کیسے نکلتے ہیں۔ ان کے مطابق پارٹی تب تگڑی ہوتی ہے جب اس پر آزمائش ہوتی ہے۔انھوں نے کہا کہ میں اپنی پارٹی کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں کہ وہ اس مشکل وقت سے نکلے ہیں۔ ان کے مطابق کئی اراکین بڑی مشکل سے یہاں پہنچے ہیں اور کئی ایسے بھی ہیں جن کی طبیعیت بھی ٹھیک نہیں تھی۔وزیر اعظم عمران نے اپنے خطاب میں کہا کہ جب قوم اپنے نظریے سے ہٹتی ہے تو پھر وہ ختم ہو جاتی ہے۔وزیر اعظم عمران نے کہا کہ ’یہ جو سینیٹ کے الیکشن ہوئے ہیں،،، مجھے شرم آتی ہے سپیکر صاحب،، بکرا منڈی بنی ہوئی ہے،، ہمیں ایک مہینے سے پتا تھا،، الیکشن کمیشن نے کہا ہم نے بڑا اچھا الیکشن کرایا ہے،،، اس سے مجھے اور صدمہ ہوا،، اگر یہ الیکشن آپ نے اچھا کرایا ہے تو پھر پتا نہیں کہ برا الیکشن کیسا ہوتا ہے۔‘

Comments are closed.