عمران خان کو مائنس کرنے کے چکروں میں مولانا فضل الرحمٰن خود مائنس

 لاہور (ویب ڈیسک) نامور کالم نگار چوہدری محمد اکرم اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔مولانا فضل الرحمٰن یہ یاد رکھیں کہ ریاست کے اندر ریاست کبھی قابل قبول نہیں ہو سکتی۔ ریاست کے اندر ریاست کی کبھی بھی حوصلہ افزائی نہیں ہو سکتی۔ اگر مولانا فضل الرحمان ریاست کے اندر ریاست قائم کرنے

کی کوشش کریں گے آئین اور قانون کی مقرر کردہ حدود سے تجاوز کریں گے۔ قانون کو ہاتھ میں لیں گے، ریاست کے شہریوں کو ذاتی مفادات کی خاطر استعمال کریں گے تو پھر ان کے ساتھ کوئی رعایت نہیں کی جائے گی۔ پھر قانون اپنا راستہ خود بنائے گا، قانون حرکت میں آئے گا پھر قطع نظر اس کے اسے توڑنے والا کون ہے اس کے ساتھ وہی سلوک کیا جائے گا جو کسی بھی قانون توڑنے والے کے خلاف ہوتا ہے۔ مولانا فضل الرحمان کو یاد رکھنا چاہیے کہ وہ اس ملک کے شہری ہیں اور اس ملک کے محافظوں کا یہ عزم ہے کہ وہ کسی بھی قسم کی شر پسندی، کسی بھی قسم کی منظم سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ مولانا کو یہ جان لینا چاہیے کہ جس راستے پر وہ چل رہے ہیں ہیں اس کا نقصان کسی کو ہوتا ہے یا نہیں یہ تو بعد کی بات ہے لیکن اس کا نقصان مولانا کو ضرور ہوگا۔ مولانا فضل الرحمٰن مائنس ون کی شدید خواہش رکھتے ہیں ہیں ان کی یہ خواہش پوری ہو گی اور جمعیت علماء  اسلام سے مولانا فضل الرحمان سب سے پہلے مائنس ون ہوں گے۔ ان کی سب سے بڑی حمایتی مسلم لیگ نون ہے ہے اور اس مسلم لیگ سے میاں نواز شریف مائنس ون ہو جائیں گے۔ پھر جو کوئی بھی ریاست کے خلاف، ریاست کے مفادات کے خلاف، ریاست کے شہریوں کے خلاف کام کرے گا۔ وہ یہ جان لے کہ اس نے مائنس ہونا ہے۔ فوج ملک کے دفاع کی ضامن ہے۔انہوں نے زمینی سرحدوں و فضائی سرحدوں، سمندری سرحدوں، نظریاتی و جغرافیائی سرحدوں کی ذمہ داری انہوں نے اٹھا رکھی ہے۔ اللہ اس ملک کی بھلائی چاہنے والوں اس ملک کی حفاظت کرنے والوں کی طاقت میں اضافہ فرمائے۔

Comments are closed.