عوام کو زبردست جھٹکا دینے کا فیصلہ

اسلام آباد(ویب ڈیسک ) آئی ایم ایف کی شرائط کو پورا کرنے کے لئے نیپرانے ایک بار پھر سے بجلی کے نرخ بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے۔ نجی ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) نے آئی ایم ایف (آئی ایم ایف) کے مقرر کردہ شرائط و ضوابط کو پورا

کرنے کے لئے ایک بار پھر بجلی کی قیمتوں میں اضافے کا فیصلہ کیا ہے ۔فیصلے سے صارفین پر 91.36 ارب روپے کا بوجھ پڑے گا جبکہ نیپرا میں بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کی درخواستوں کی سماعت آج ہوگی۔ذرائع کادعوی ہے کہ پہلی سہ ماہی کی ایڈجسٹمنٹ کے لئے 44.70 ارب روپے مانگے گئے ہیں اور دوسری سہ ماہی کی ایڈجسٹمنٹ کے معاملے میں 46.65 ارب روپے مانگے گئے ہیں۔ آئی ایم ایف نے اس بات پر زور دیاہے کہ بجلی کے بل اداکرنے والے صارفین سے چوری کے نقصانات کی وصولی کی جائے۔ بجلی استعمال کرنے والے صارفین سے وصول کردہ یہ اضافی ادائیگیاں کام اور نقصانات کی بحالی کے حوالےسے ہیں۔ نجی ٹی وی کے مطابق موجودہ حکومت نے ابھی تک سرکاری شعبے کی پاور کمپنیوں کے انتظامیہ اور پیشہ ور بورڈز کا تقرر نہیں کیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ متعدد الیکٹرک کمپنیوں کے اکاونٹس سسٹم ابھی مینول ہیں جو بدعنوانی کا بڑا ذریعہ بن گئے ہیں۔ یاد رہے کہ آئی ایم ایف نے کورونا وائرس کی وباکے دوران ملکی معیشت کی مدد اور پاکستان کے شہریوں کی جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنانے کےلئےپاکستان کو 500 ملین ڈالر کے قرض کی منظوری دی تھی۔ اپوزیشن کی بڑی جماعتیں پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن پہلے ہی آئی ایم ایف کی شرائط کو پورا کرنے کی وجہ سے حکومت کو سخت تنقید کا نشانہ بنا رہی ہیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *