فواد چوہدری کی جہانگیر ترین گھر آمد ، ترین گروپ سے ملاقات :

لاہور (ویب ڈیسک ) وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہاہے کہ جہانگیر ترین گروپ کے ارکان نے عمران خان پر اعتماد کا اظہار کیا ہے، ہرخاندان میں چھوٹے موٹے اختلافات ہو جاتے ہیں،فیصلہ کیا ہے کہ تمام معاملات مل بیٹھ کر حل کریں گے۔تنظیمی طریقے سے مسائل حل کیے جائیں گے،

نہ جہانگیر ترین ریلیف مانگیں گے نہ عمران خان ایسا کریں گے،پی ٹی آئی میں اختلاف نہیں، ناراض ارکان کے موقف میں وزن ہے، پہلے دن سے یہ کہا کہ قومی احتساب بیورو (نیب)اتنا اوپر نہ جائے کہ کسی کیس کو منطقی انجام تک نہ پہنچا سکے،علی ظفر کی رپورٹ پر انہیں اور ہمیں اعتماد ہے۔جہانگیر ترین گروپ کے صوبائی وزیر نعمان لنگڑیال نے وفاقی وزیر فواد چوہدری کے اعزاز میں ظہرانہ دیا جس میں وفاقی وزیر نے 7 سے زائد اپم پی ایز سے بات چیت کی۔جہانگیر ترین گروپ کی دعوت میں شرکت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جہانگیرترین کے حوالے سے بنائی گئی کمیٹی کی رپورٹ کا انتظار ہے، باہمی مسائل کو مل بیٹھ کر حل کریں گے، ہم سب ایک خاندان کی طرح ہیں ان اراکین نے وزیراعظم پر اعتماد کا اظہار کیا ہے،اپوزیشن کو غلط فہمی ہوجاتی ہے کہ پی ٹی آئی میں اختلافات ہوگیا، امید ہے اب اپوزیشن کی لڈیاں ختم ہو جائیں گی۔وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری پارٹی کے سیکرٹری جنرل عامرکیانی کے ہمراہ ترین گروپ کے صوبائی وزیر ملک نعمان لنگڑیال کی رہائش گاہ پہنچے۔ظہرانے پر ترین گروپ کے ارکان نے ایک بار پھر پنجاب حکومت کے خلاف شکایتوں کے انبار لگا دئیے۔نذیر چوہان نے کہا کہ حکومت جہانگیر ترین کیس میں علی ظفر رپورٹ منظرعام پر لائے۔وفاقی وزیر اطلاعات بے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کے اندرکسی نئے گروپ کی بات درست نہیں ہے، کسی رکن اسمبلی کو فنڈز نہیں دئیے جارہے، صرف عمران خان ہی نہیں عام لوگ بھی نظام عدل اور احتساب سے مطمئن نہیں، عمران خان کبھی جہانگیر ترین کی کوئی سفارش نہیں کریں گے، پہلے دن سے یہ کہا کہ قومی احتساب بیورو (نیب)اتنا اوپر نہ جائے کہ کسی کیس کو منطقی انجام تک نہ پہنچا سکے۔فواد چوہدری نے کہاہے کہ ناراض ارکان کے موقف میں وزن ہے، ان کے مسائل حل کرنے کے لیے روابط بہتر کریں گے۔ملاقات میں 6 رکنی کوآرڈینیشن کمیٹی بنادی گئی جو ترین گروپ سے کیے گئے وعدوں پر عملدرآمد کو یقینی بنانے کے لیے کام کرے گی۔قبل ازیں ظہرانے میں فواد چودھری نے سعید اکبر نوانی سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے سارے جٹ اکٹھے کر لیے۔ جس پر اجمل چیمہ نے جواب دیا کہ دھماکا ایسے ہونا ہی تھا، آپ کون سا کسی کمزور کی سنتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *