فیصل واوڈا نااہلی کیس کے حوالے سے الیکشن کمیشن سے اہم خبر

اسلام آبا د( ویب ڈیسک )چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ نے فیصل واوڈا نااہلی کیس کی سماعت میں کہا کہ کوئی کتنا بڑا کیوں نہ ہو، میرٹ پر فیصلہ کریں گے،پوچھ کر بتائیں کہ آپ کے موکل نے دوہری شہریت کب چھوڑی؟وکیل فیصل واوڈا کو جواب کیلئے آخری موقع بھی دیدیا گیا،

۔دوہری شہریت پر فیصل واوڈا کی نااہلی سے متعلق کیس کی سماعت چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی سربراہی میں ہوئی،۔درخواست گزار کا کہنا تھا کہ اگر فیصل واوڈا بڑے آدمی ہیں ، ان سے نہیں پوچھا جا سکتا تو ریٹرننگ افسر سے تو پوچھیں، آر او بتائے کہ دوہری شہریت کے باوجود کاغذات نامزدگی کیوں منظور کئے؟چیف الیکشن کمشنر نے ریمارکس دیئے کہ کوئی کتنا بڑا ہو، الیکشن کمیشن پر اس کا اثر نہیں، کمیشن میرٹ پر فیصلہ کرے گا، کسی سے متاثر نہیں ہو گا۔چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ فیصل واوڈا نے کاغذات نامزدگی جمع کرواتے وقت دوہری شہریت والے خانے میں این/اے لکھا۔سکندر سلطان راجا نے استفسار کیا کہ کیا فیصل واوڈا کی دوہری شہریت نہیں تھی یا اس وقت نہیں تھی؟وکیل فیصلہ واوڈا، محمد بن محسن نے بتایا کہ فیصل واوڈا کی اس وقت دوہری شہریت نہیں تھی، جس پر چیف الیکشن کمشنر نے سوال کیا کہ کیا فیصل واوڈا نے پہلے دوہری شہریت رکھی ہوئی تھی؟ فیصل واوڈا نے کس تاریخ کو دوہری شہریت چھوڑی؟محمد بن محسن نے کہا کہ اس بات سے متعلق مجھے ہدایت لینا ہو گی جس پر ممبر الیکشن کمیشن الطاف ابراہیم نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ کیا تاخیری حربے ہوئے کہ اپ ہدایت لیکر بتائیں گے، آپ کوعلم نہیں تو یہاں کیوں آئے؟الطاف ابراہیم نے کہا کہ آپ لوگوں کے ایسے کاموں کی وجہ سے باتیں ہمیں سننا پڑتی ہیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.