لاہور کی معروف لیڈی ڈاکٹر پراسرار طور پر جا ن بحق

لاہور(ویب ڈیسک)رائیونڈ سٹی کے علاقے میں واقع نجی ہاؤسنگ سوسائٹی کے گھر سے چلڈرن ہسپتال کی خاتون ڈاکٹر بے جان حالت میں ملی ، شبہ ظاہر کیا گیا ہے کہ خاتون کو زندگی سے محروم کیا گیا اور پھر واردات کو اور رنگ دینے کی کوشش کی گئی ۔ پولیس نے میت کو معائنہ کے لیے منتقل کر کے

تفتیش کا آغاز کر دیا پولیس کے مطابق ابتدائی رپورٹ میں زدوکوب کیا جانا ثابت ہوا ہے۔تفصیلات کے مطابق رائیونڈ سٹی کے علاقے میں واقعہ نجی سوسائٹی میں رہائشی پذیر 40سالہ ماریہ کو بے جان حال میں کمرے میں پڑا دیکھ کر صفائی کے لیے آنے والے نوکرانی نے پولیس کو اطلاع دی جس پر پولیس نے موقع پر پہنچ کرمیت کو قبضے میں لے کر معائنہ کے لیے منتقل کر کے فرانزک ٹیم کی مدد سے جائے وقوعہ سے تمام شواہد اکٹھے کر کے تفتیش کا آغاز کر دیا پولیس کے مطابق خاتون ماریہ چلڈرن ہسپتال میں ڈاکٹر اور دو بچوں کی ماں تھی اس کا شوہرراشد ساہیوال میں کام کرتا ہے جس نے تقریباً 02ماہ قبل ساہیوال میں ہی دوسری شادی کی تھی خاتون کوزندگی سے محروم کیا گیا ہے یا خاتون نے دلبرداشتہ ہو کر خود موت کو سینے سے لگایا ہے اس حوالے سے مزید تحقیقات کی جا رہی ہیں ا صل حقائق رپورٹ کے بعد ہی سامنے آئیں گے دوسری جانب ڈاکٹر ماریہ کی پراسرار موت پر بھائی نے شوہر ارشد محمود کے خلاف 302 کے مقدمے کی درخواست جمع کرادی ۔ماریہ کے بھائی کا کہنا ہے کہ ہمیں پورا یقین ہے کہ ہماری بہن کو زندگی سے محروم کیا گیا۔ انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ماریہ کے جسم پر زدوکوب کیے جانے کے نشانات بھی پائے گئے، ڈاکٹر ماریہ 2بچوں کی ماں اورچلڈرن ہسپتال کی سرجن تھی وہ ایسا انتہائی قدم نہیں اٹھا سکتی۔ پولیس مزید تفتیش میں مصروف ہے ، جلد حقائق سامنے آجائیں گے ۔

Comments are closed.