لاہور کے ’لبرٹی چوک ‘کا نام تبدیل کر دیا گیا

لاہور (نیوز ڈیسک) صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور کی ضلعی انتظامیہ نے شہر کے مشہور و معروف لبرٹی چوک کا نام تبدیل کرکے ’رینبواسکوائر‘ رکھ دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق ضلعی انتظامیہ کی طرف سے ’سوہنا لاہور‘ مہم جاری ہے جس کے تحت ایک نجی پینٹ کمپنی کے تعاون سے لبرٹی سے ملحقہ شاہراہ کو قوس قزح

کے سات رنگوں کے مطابق رنگ دیا گیا کیوں کہ ضلعی انتظامیہ نے لبرٹی چوک کا نام تبدیل کرکے ’ رینبو اسکوائر‘ رکھ دیا ہے ، رینبو اسکوائر کو سبز، پیلے ، لال ، نیلے ، گلابی ، سرخ اور ہلکے جامنی رنگوں سے سجایا گیا ہے۔میڈیا ذرائع کے مطابق ڈپٹی کمشنر لاہور مدثر ریاض نے کہا ہے کہ لبرٹی چوک کا نام اس کی خوبصورتی کے مطابق رکھا گیا ہے اس سلسلے میں فٹ پاتھ قرب سٹون اور لائن مارکنگ کا کام بھی مکمل کر لیا گیا ہے جب کہ رینبو اسکوائر پر کیا جانے والا پینٹ پاکستان میں سب سے بڑا ہے جو 70 ہزار سکوئیر فٹ کے حصے پر مشتمل ہے۔قبل ازیں حکومت کو بادشاہی مسجد کا نام تبدیل کرنے ‘بابری مسجد ‘رکھنے کا مشورہ بھی دیا گیا ، معروف صحافی توفیق بٹ کا اپنے کالم میں کہنا ہے کہ کرتاپور راہداری کھولنے کی تقریب میں وزیراعظم عمران خان سکھوں کی روایتی پگڑی پہن لیتے تھے اس سے کم ازکم ہم اس یقین میں لازمی مبتلا ہو جاتے وہ جو فیصلہ کرتے ہیں اپنی طرف سے ٹھیک کرتے ہیں۔اگلے روز میں نے انہیں مشمورہ دیا کہ جس دلچسپی اور لگن سے انہوں نے کرتاپور راہداری کا منصوبہ مکمل کروایا اس دلچسپی اور لگن سے وہ کرتاپور کے کہیں آس پاس یا پاکستان کے کسی بھی مقام پر ایک خوبصورت مسجد تعمیر کروائیں جس کا نام ” بابری مسجد ” رکھیں ، اس سے ہندوستان کو بڑی مرچیں لگیں گی۔ہو سکے تو یہ مسجد ” بنی گالہ” میں تعمیر کروائیں بلکہ ادا کیا جانے والی نمازوں کی امامت خود کریں یہ بھی ممکن نہ ہو تو بادشاہی مسجد کا نام تبدیل کرنے بابری مسجد رکھ دیں۔یہ بھی نہ کر سکیں تو بادشاہی مسجد کی حالت ہی ٹھیک کروا دیں۔لاہور میں سیاحوں کی دلچسپی کا حامل یہ تاریخی مقام ہر لحاظ سے برباد ہو چکا ہے یوں محسوس ہوتا ہے کہ اس مسجد کی نگرانی محکمہ اوقاف پنجاب کے بجائے اس علاقے کے ارد گرد رہنے والے لوگوں ے پاس ہے۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *