لاہور ہائیکورٹ نے آئی جی پنجاب کے لیے حیران کن حکم جاری کر دیا

لاہور(ویب ڈیسک)چیف جسٹس لاہورہائی کورٹ مسٹر جسٹس محمد قاسم خان نے سیالکوٹ موٹر وے پر خاتون سے بداخلاقی کی تحقیقات کے لئے جوڈیشل کمیشن کی تشکیل کی درخواستوں پرپولیس کے سینئر افسروں کو ہر ضلع میں روز رات کو گشت کرنے کا حکم دیدیا،عدالت نے آئی جی پنجاب پولیس کے ہفتہ وار گشت اورصوبہ

بھر کے ڈی پی او ز کے گشت کا شیڈول طلب کرتے ہوئے استفسار کیا کہ عدالت کوبتایا جائے کہ آئی جی پنجاب اور ماتحت پولیس افسران روزانہ کتنے گھنٹے گشت کر یں گے۔عدالت نے سرکاری پراپرٹی پرزندگی سے محروم یا گھائل شہریوں کو دیت کی ادائیگی کے معاملہ پر بھی فریقین سے معاونت طلب کرلی۔ فاضل جج نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ حکومت آئین کے تحت شہریوں کے تحفظ کی پابند ہے،بادی النظر میں پولیس نظام فیل ہو چکا ہے۔میاں آصف محمود اور ندیم سرور ایڈووکیٹس کی درخواستوں پر سماعت شروع ہوئی تو ڈی آئی جی لیگل جواد ڈوگر نے رپو ر ٹ پیش کرتے ہوئے کہا پورے پنجاب اور موٹر وے پر موثر پٹرولنگ نظام موجود ہے۔فاضل جج نے پولیس افسر سے استفسار کیا کہ رپورٹ میں کیا کہا ہے، کیا پلان دیا ہے؟مجھے بتائیں آئی جی پنجاب روزانہ کتنے گھنٹے بدل بدل کر کہاں گشت کرے گا؟۔ رات 11 سے 1 بجے ہر ضلع میں ایک سینئر افسر روڈ پر ہونا چاہیے۔ پولیس افسرنے کہا کہ ہم نے پہلے سے موجود پیٹرولنگ سسٹم کی تفصیل دی ہے۔ فاضل جج نے کہا کہ آپ کا پرانا پیٹرولنگ سسٹم ناکام ہو گیا ہے، اگر میں اپنی عدالت میں کام نہیں کروں گا تو سول جج تونسہ سے کام نہیں لے سکتا، مجھے بتائیں آئی جی کتنے دن اور کس کس وقت گشت کرے گا؟۔پولیس افسر نے کہا کہ ہمارا نظام پہلے ہی موجود ہے،پولیس کا سینئر افسر روز رات کو گشت کرتا ہے، چیف جسٹس نے کہا آپ کا جو سسٹم ہے اس میں جواب آتاہے راجر میں فلاں چوک میں ہوں بعد میں پتہ چلتا ہے وہ افسر گھر بیٹھاکھانا کھا رہا تھا، مجھے لوگوں کی حفاظت چاہیے۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ سی سی پی او کے بیانات پر پوری کابینہ کو معافی مانگنی چاہیے تھی،اس معافی سے لوگوں کو حوصلہ پیدا ہوتا۔جس طرع کی تفتیش ہو رہی ہے اس میں کتنی صداقت ہے اور کتنی ڈرامہ بازی۔سرکاری وکیل ملک عبدالعزیز اعوان نے اعلی سطحی کمیٹی کا نوٹیفیکیشن پیش کر تے ہوئے کہا کہ عدالتی حکم پر اس معاملہ کی تفتیش کیلئے اعلیٰ سطح کی کمیٹی بنا دی گئی ہے۔ عدالت نے مذکورہ بالا احکامات کیساتھ کیس کی مزید سما عت ملتوی کردی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.