لاہور ہائیکورٹ نے فیصلہ کردیا

لاہور (ویب ڈیسک) لاہور ہائیکورٹ نے قرار دیا ہے کہ عدت گزارے بغیر شادی کو بے قاعدہ یا فاسد کہا جا سکتا ہے لیکن اسے باطل قرار نہیں دیا جاسکتا، عدالت نے عدت مکمل کیے بغیر شادی کو گناہ کا فعل قرار دینے کی درخواست خارج کردی۔لاہور ہائیکورٹ کےجسٹس علی ضیا باجوہ نے

امیر بخش کی درخواست خارج کرنے کا فیصلہ جاری کیا۔درخواست گزار کا موقف تھا کہ اس کی سابق بیوی آمنہ نے عدالت سے تنسیخ نکاح کا یکطرفہ فیصلہ لیا اور اگلے روز اسماعیل نامی شخص سے شادی کرلی۔درخواست میں موقف اپنایا گیا کہ عدت مکمل کیے بغیر اگلا نکاح کرنا گناہ اور بدکاری کے زمرے میں آتا ہے اس لیے بدکاری کا مقدمہ درج کروایا جائے۔عدالت نے قرار دیا کہ درخواست گزار کا موقف درست مان بھی لیا جائے تب بھی شادی باطل نہیں۔ عدت مکمل کیے بغیر ہونے والی شادی کو بے قاعدہ تو کہا جاسکتا ہے لیکن وہ باطل نہیں۔ اس لیے جوڑے کو بدکاری کا مرتکب قرار نہیں دیا جا سکتا۔

Comments are closed.